ہندستان ہندوستان

قرآنی تعلیمات پر مبنی تربیت کے بغیر سب پر محیط سماج کی تشکیل ناممکن

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 14-March-2019

حیدر آباد، (پریس نوٹ) اخراجیت اور امتیازی رویّے انسانوں کے وضع کردہ ہیں۔ ہمیں اپنے بچوں کی تربیت انصاف، سچائی اور مساوات کی تعلیمات کی بنیاد پر کرنی چاہیے تاکہ ایک اشتمالی سماج (Inclusive Soceity) کی تشکیل ہو۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر محمد اسلم پرویز،و ائس چانسلر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی نے آج شعبۂ سیاسیات اور البیرونی مرکز برائے سماجی اخراجیت و اشتمالی پالیسی کے زیر اہتمام ’’حیدرآباد ڈائیلاگ‘‘ خصوصی لکچر سیریز کے افتتاحی خطبہ میں کیا۔ اسکول برائے فنون و سماجی علوم کے سمینار ہال میں منعقدہ ان کے لکچر کا عنوان ’’اشتمالیت و اخراجیت، بطور شخصی خصائل‘‘ تھا۔ ڈاکٹر اسلم پرویز، نے اپنے پاور پوائنٹ پریزنٹیشن میں قرآن کی مختلف آیات کا حوالہ دیا جن میں اشتمالیت کا درس دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قرآن میں اللہ کی کتابوں اور رسولوں پر بھی ایمان لانے کا درس دیا گیا ہے۔ اس طرح مختلف مذاہب، ان کی کتابوں اور مذہبی ہستیوں کا احترام بھی ضروری ہے۔ لیکن عمل صرف قرآن پر کیا جائے گا کیونکہ یہ مکمل ہے اور اس میں تحریف ممکن نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اشتمالیت کی تعلیم بچوں کو گھر سے ہی دی جانی چاہیے۔ انہیں دیگر مذاہب کے احترام اور قرآنی احکامات پر عمل کرتے ہوئے دوسروں کے سامنے عملی مثال پیش کرنے کا طریقہ سکھایا جانا چاہیے تاکہ مسلمان دوسروں سے دور نہ ہوجائیں۔ انہوں نے کہا قرآن میں جگہ جگہ لوگوںکی مدد کرنے کی تلقین کی گئی ہے۔ یہ سائنس کے قانون ڈفیوژن (یعنی وسائل کا زیادتی کی جگہ سے کمی کی طرف منتقل ہونا) کے تحت ہے۔ یہاں تک کہ سورہ ماعون میں ایسے نمازیوں پر وعید کی گئی ہے جو دوسروں کو مسکینوں کو کھانا کھلانے کی رغبت نہیں دلاتے۔ ڈاکٹر اسلم پرویز نے مسلمانوں کی قرآن سے عدم واقفیت کو اختلافات کے لیے ذمہ دار قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ جب کسی کی بات پسند نہ آئے تو ہم اسے نظر انداز کرسکتے ہیں لیکن اس سے لڑائی جھگڑے میں پڑنا قرآنی تعلیمات کے مغائر ہے۔ انہوں نے نوجوانوں کو صلاح دی کہ وہ قرآن کی تعلیم پر عمل کریں اور مخالفتوں سے نہ گھبرائیں۔ پھر سماج میں جہیز جیسی لعنت بھی نہیں رہے گی اور عورت کو اس کا صحیح مقام بھی ملے گا۔ انہوں نے ایک طالبہ کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بچوں کی تربیت میں قرآنی احکامات کو ضرور شامل کریں۔تاکہ ایک صالح معاشرہ بنے اور ان کے بچے صحیح معنوں میں جنت کے حقدار ہوں۔ ابتداء میں ڈاکٹر افروز عالم، صدر شعبۂ سیاسیات نے خیر مقدم کیا اور ’حیدرآباد ڈائیلاگ‘ کی افادیت پر رشنی ڈالی۔ اس موقع پر ڈاکٹر پیکیم ٹی سیمیول، ڈائرکٹر ہنری مارٹن انسٹیٹیوٹ کے بشمول اساتذہ، ریسرچ اسکالرس اور طلبہ کی کثیر تعداد موجود تھی۔

About the author

Taasir Newspaper