فن فنکار

گھر میں سریز ہار کے باوجود وراٹ نے ٹیم کو بتایا متوازن

Written by Taasir Newspaper

Taasir English News Network | Uploaded on 15-March-2019

نئی دہلی،(یو این آئی) کپتان وراٹ کوہلی نے آسٹریلیا کے ہاتھوں گھریلو ون ڈے سریز میں 2-3 سے شکست کے باوجود ہندستانی کرکٹ ٹیم کا دفاع کرتے ہوئے اسے متوازن بتایا ہے۔پانچ میچوں کی سیریز میں جہاں ہندستانی ٹیم ابتدا میں 2-0 سے آگے تھی وہیں وہ مسلسل تینوں آخری میچ گنوا بیٹھی۔ کپتان وراٹ گھریلو فیروز شاہ کوٹلہ میدان پر کھیلے گئے پانچویں فیصلہ کن میچ میں ٹیم کو 35 رنز سے شکست کھانی پڑی اور سریز ہندستان کے ہاتھوں سے 3-2 کے فرق سے نکل گئی۔ مئی میں انگلینڈ میں ہونے والے آئی سی سی ورلڈ کپ سے پہلے یہ ہندستان کی آخری ون ڈے سریز تھی جسے تیاری کے لحاظ سے اہم مانا جا رہا تھا۔ہندستانی ٹیم کو گزشتہ ماہ 2-0 سے ٹوئنٹی 20 بین الاقوامی سیریز میں شکست ملی تھی اور اب اس کے ہاتھ سے ون ڈے سریز بھی چلی گئی ہے، لیکن کپتان وراٹ نے بھروسہ ظاہر کیا ہے کہ اس کے باوجود ٹیم کے اعتماد پر اثر نہیں پڑے گا اور وہ آئی سی سی ورلڈ کپ کے لیے تیار ہے۔وراٹ نے میچ کے بعد کہاکہ ہماری ٹیم کا کوئی بھی کھلاڑی اس ہار سے گھبرایا نہیں ہے، ہمارا اسپورٹ عملہ بھی اس ہار سے دکھی نہیں ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ ان آخری تین میچوں میں ہم کیا کرنا چاہتے تھے۔ ہم ایک ٹیم کے طور پر بہت متوازن محسوس کر رہے ہیں۔ مخالف ٹیم نے صرف ہم سے زیادہ تحمل سے کھیلا۔ میچ میں اسی بات نے فرق پیدا کیا۔ ہندستانی کپتان نے کہاکہ ہم اس میچ کو ہارنے کے باوجود بھی کچھ مختلف محسوس نہیں کر رہے ہیں کیونکہ فی الحال ہم بہت اچھا کرکٹ کھیل رہے ہیں۔ ہم نے پانچ میں سے تین میچ ہارے ہیں جبکہ آسٹریلیا نے دباؤ کے باوجود مکمل جارحیت کے ساتھ مظاہرہ کیا ہے اور ہاتھ آئے مواقع کا بھی فائدہ اٹھایا اور وہ یقینا جیت کا مستحق ہے۔سیریز میں ہندستانی ٹیم نے عالمی کپ کے پیش نظر متعدد کمبی نیشن کے ساتھ کوشش کی۔ بھونیشور کو پہلے دو ون ڈے میں آرام دیا گیا، امباتی رائیڈو، لوکیش راہل اور رشبھ پنت نے مڈل آرڈر کی ذمہ داری سنبھالی جبکہ مہندر سنگھ دھونی کو بھی آخری دو میچوں میں آرام دیا گیا، وہیں يجویندر چہل کو بھی نکال دیا گیا۔30 سالہ بلے باز نے کہا کہ ان کے عالمی کپ کے لیے ٹیم تقریبا تیار ہو چکی ہے اور آئی سی سی ٹورنامنٹ میں موجودہ ٹیم سے زیادہ سے زیادہ ایک ہی تبدیلی کی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ ایک ٹیم کے طور پر ہم متوازن ہیں۔ ہردک پانڈیا کی ٹیم میں واپسی ہو گی۔ ان کے آنے سے بلے بازی آرڈر کو طاقت ملے گی اور بولنگ کے اختیارات بھی ملیں گے ۔وراٹ نے کہاکہ ہم جانتے ہیں کہ ہمیں کس مجموعہ کے ساتھ اترنا ہے۔ ہمارے دماغ میں الیون بالکل واضح ہے۔ ہمیں عالمی کپ میں صرف دباؤ کی صورت میں بہتر کارکردگی کرنا ہوگی۔ یہ بین الاقوامی میچ ہیں اور ان میں جنہیں بھی موقع ملے انہیں اپنی ذمہ داری ادا کرنی چاہیے۔ اگرچہ کئی بار آپ دباؤ کی صورت میں اتنا اچھا نہیں کھیل پاتے ہیں جس کی ضرورت هوتي ہے۔ عالمی کپ سے پہلے یہ ہندستان کی آخری ون ڈے سریز تھی جبکہ اس کے بعد اب ٹیم کو دو ماہ تک چلنے والے آئی پی ایل ٹورنامنٹ میں کھیلنا ہے، اس کے ٹھیک بعد مئی میں عالمی کپ میں اترنا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper