کھیل

اکیلے کئی ٹیموں پر بھاری ہیں وراٹ کی 41 سنچری

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 21-May-2019

نئی دہلی،(یو این آئی ) بلے بازی کے دبنگ ہندستانی کپتان وراٹ کوہلی 30 مئی سے انگلینڈ میں شروع ہونے جا رہے ون ڈے ورلڈ کپ میں اپنی 41 سنچریوں کی بدولت ایک دو نہیں بلکہ کئی ٹیموں پر بھاری پڑیں گے۔وراٹ نے اپنے شاندار کیریئر میں 227 میچوں میں 41 سنچری بنا ڈالی ہیں اور وہ عالمی ریکارڈ حامل ہم وطن سچن تندولکر 49 ون ڈے سنچریوں کے عالمی ریکارڈ سے صرف آٹھ سنچری دور ہیں اور اگلے ایک سال میں وہ سچن کے عالمی ریکارڈ کو توڑ سکتے ہیں ۔ہندوستانی کپتان اپنی ون ڈے سنچریوں کے معاملے میں جہاں اکیلے کئی ٹیموں پر بھاری پڑیں گے وہیں ٹیم انڈیا ون ڈے سنچریوں کے معاملے میں ورلڈ کپ کے دیگر تمام نو ٹیموں پر بھاری پڑیں گی۔ وراٹ، نائب کپتان روہت شرما اور اوپنر شکھر دھون کی تکڑی بھی ون ڈے سنچریوں کے معاملے میں دیگر تمام نو ٹیموں پر بھاری پڑے گی۔وراٹ کی 41 سنچریوں کے مقابلے میں ورلڈ کپ کی کئی ٹیمیں بہت پیچھے ہیں۔ افغانستان کی ورلڈ کپ ٹیم نے کل 13 سنچری، بنگلہ دیش نے 31 سنچری، سری لنکا نے 13 سنچری اور ویسٹ انڈیز نے 40 سنچری بنائی ہیں۔گزشتہ چمپئن آسٹریلیا کی ورلڈ کپ ٹیم کے 46 سنچری، پاکستان کے 44 سنچری اور نیوزی لینڈ کے 51 سنچری ہیں۔ وراٹ سے تھوڑا آگے میزبان انگلینڈ کے 60 سنچری اور جنوبی افریقہ کے 61 سنچری ہیں۔ورلڈ کپ کی 10 ٹیموں کو دیکھا جائے تو اکیلے ہندستان کی 91 سنچری ہیں جو دیگر تمام نو ٹیموں پر بھاری پڑتی ہیں۔ ہندستان کی 91 سنچریوں میں وراٹ کی 41، روہت کی 22 اور شکھر کی 16 سنچریوں کی حصہ داری ہے۔ ان سب سے اوپر تین ہندوستانی بلے بازوں کی ہی 79 سنچری ہیں جو باقی ٹیموں کی کل سنچریوں سے زیادہ ہیں۔ اس میں اگر سابق کپتان مہندر سنگھ دھونی کی نو سنچریوں کو جوڑ دیا جائے تو ہندوستانی ٹیم کے چار بلے بازوں کے سنچریوں کی تعداد ہی 88 پہنچ جاتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper