دنیا بھر سے

تاجکستان کی جیل میں انتہا پسندوں کا ہنگامہ، 32افراد ہلاک

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 21-May-2019

لندن ( آئی این ایس انڈیا ) ایک تاجک جیل میں ہونے والے ہنگامہ میں تیسں افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کر دی گئی ہے۔ حکومت کے مطابق ہنگامہ آرائی’اسلامک اسٹیٹ‘ سے تعلق رکھنے والے قیدیوں نے شروع کی تھی۔وسطی ایشیائی ریاست تاجکستان کی وزارت انصاف کے مطابق بتیس ہلاکتوں میں تین اہلکار اور انتیس قیدی شامل ہیں۔ یہ پرتشدد ہنگامہ آرائی دارالحکومت دوشنبے سے تقریباً دس کلومیٹر دور واقع نواحی شہر وحدت کی انتہائی سکیورٹی کی جیل میں ہوئی۔اس ہنگامہ آرائی کے دوران انتہا پسند قیدیوں نے جیل کے ہسپتال کو آگ بھی لگا دی اور کئی قیدیوں کو یرغمال بھی بنایا۔ وہ ان یرغمالیوں کی آڑ میں جیل سے فرار ہونے کی کوشش میں تھے۔تاجک حکومت کے مطابق جہادی تنظیم ’اسلامک اسٹیٹ‘ (داعش) سے تعلق رکھنے والے قیدیوں نے اتوار کے دن ہنگامے کی شروعات چاقو کے وار کر کے جیل کے کم از کم تین محافظوں اور پانچ قیدیوں کو ہلاک کرنے سے کی۔ ان ہلاکتوں کے بعد صورت حال کو قابو میں کرنے کے لیے سکیورٹی فورسز کی جوابی کارروائی میں چوبیس انتہا پسند قیدی مارے گئے۔ یہ نہیں بتایا گیا کہ آیا ہلاک ہونے والوں میں ہنگامہ کرنے والے انتہا پسند قیدیوں کا لیڈر بہروز گل مراد بھی شامل ہے۔وزارت انصاف نے جیل کے فساد میں تاجکستان کی کالعدم اسلام پسند سیاسی جماعت اسلامک رینائسانس پارٹی (IRP) کے دو سینئر رہنماؤں کی ہلاکت کے علاوہ ایک انتہا پسند مذہبی لیڈر کے بیٹے کے مارے جانے کی بھی تصدیق کی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper