ہندستان ہندوستان

تاریخی علاقہ پانی پت میں گریش جویال کی میٹنگ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 02-May-2019

نئی دہلی(ریلیز)ہریانہ کے پانی پت اور نواحی علاقے میں جناب گریش جویال قومی تنظیمی کنوینر مسلم راشٹریہ منچ نے کئی میٹنگ لی۔ جس میں وہاں کے مقامی کسان اور جانور پالنے کا پیشہ اختیار کرنے والے افراد نے شرکت کی اور صحتمند بات چیت کے بعد یہ فیصلہ لیا گیا کہ آنے والے الیکشن میں این ڈی کی قیادت والی بی جے پی سرکار کو کامیاب بنا کر ملک میں ترقی کی رفتار کو اور تیزی سے آگے بڑھانا ہے۔ جس میں ہریانہ کے کسانوں کی شراکت کے بغیر یہ کام ممکن نہیں ہے اور سرکار بھی زمین سے منسلک تمام طبقات کی بہبود کے پہلے بھی سینہ سپر تھی اور آئندہ بھی رہے گی۔ گریش جویال نے بتایا کہ جس طرح سے زمین کی ناہموار ہونے کے سبب دودھ کا کاروبار کر نے والے لوگ رسائنک کھان پان کے استعمال سے جانوروں کے تن سے زیادہ دودھ تو پیدا کر لیتے ہیں لیکن وہ رسائنک اشیاء انسانوں کے جسم میں دودھ کے ذریعہ پہنچ کر لوگوں میں بیماریوں کا سبب بنتے ہیں۔ اسی طرح سے جناب گریش جویال نے مزید بتایا کہ کھیتی باڑی میں رسائنک کھادوں سے اناج کے ذریعہ ہماری جسم میں بیماریوں کی بڑی کھیپ پہنچ جاتی ہے اور مہلک امراض کی شکل میں وہ واضح ہوکر ہمیں موت کے گھاٹ تک پہنچا دیتی ہے۔ گریش جویال نے اخباروں کیلئے جاری بیان میں کہا کہ ان سب امراض اور وبا سے نمٹنے کیلئے ہمیں ضرور ت اس بات کی ہے کہ ہم اناج کی پیداوار ہو یا دودھ دہی کی اس میں زیادہ سے زیادہ قدرتی کھادوں اور کھاس پودوں کا استعمال کریں ۔ اس سے ہمارے جانوروں کی زندگیاں بھی زیادہ دن تک رہیں گے اور ہمیں فیضیاب کرتی رہیں گے اس کے علاوہ ہمارے جسموں میں صحتمند خون کی پیداوار کے سبب ہم تمام ملک کے باشندے صحتمند اور توانائی کے ساتھ اپنے روز مرہ کی ضروریات کو پورہ کرسکیں گے۔ گریش جویال نے ملک میں خواتین کی گھٹتی شرح پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس گھر میں خاتون نہیں ہوتی وہ گھر گھر نہیں ہوتا بلکہ ویران ہوتا ہے۔ ایک گھر کا تصور عورت کے آنے کے بعد ہی مکمل ہوتا ہے، اسی لئے کہا جاتا ہے کہ ماں کے قدموں کے نیچے جنت ہے۔ اسی جذبے کے تحت گزشتہ پانچ سال کی سرکار نے ملک میں خواتین کے بہبود کے سلسلے میں جتنا ممکن ہو سکتا تھا توجہ دیا۔ مرکزی این ڈی اے کی سرکار نے گزشتہ پانچ سالوں میں مسلمانوں کی بہبود کے خاطر جو کچھ ممکن ہوسکتا تھا وہ کیا۔ جیسے حج کیلئے سبسڈی میں اضافہ کیا گیا۔ پانی کی جہازوں سے لاکھوں افراد کو حج کی سعادت سے سرفراز کر نے کیلئے مودی سرکارنے بڑا قدم اٹھایا۔ خواتین کی بہبود میں ایک بڑا قدم مانتے ہوئے کہا کہ طلاق بدعت کے خلاف اقدام مودی سرکار کی وہ پہل ہے جو آج تک ہندستان میں کسی سرکار نے نازک مسئلہ ہونے کی وجہ سے اٹھا نہیں سکے تھے۔ مودی سرکار نے خواتین کے بہبود کیلئے ہر اقدام کیا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper