فن فنکار

’کنٹینٹ ملکہ‘ ایکتا کپور نے بالاجی ٹیلی فلمز شروع کرنے کا اپنا ذاتی تجربہ کیا اشتراک

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 15-May-2019

ممبئی(ایم ملک)ایکتا کپور واقعی میں ایک اننوویٹر ہیں اور ان کا کام اسی کا ثبوت ہے ! انڈسٹری کا ایک جانا مانا نام، ایکتا نے اپنی ماں کے ساتھ بہت کم عمر سے ایک پروڈیوسر کے طور پر اپنے کیریئر کی شروعات کی تھی، اور اس دوران بہت سارے سوال تھے جو ایکتا سے اکثر پوچھے جاتے تھے. ایکتا نے بالاجی کے ساتھ اپنے سفر کو آخر کار ایک نئے سوشل میڈیا پوسٹ کے ساتھ اشتراک کیا ہے. فلم پروڈیوسر نے بہت چھوٹی عمر میں اپنی ماں کے ساتھ ایک پروڈیوسر کے طور پر اپنا سفر شروع کیا تھا اور ایسا ان دنوں میں انتہائی کم ہوا کرتا تھا. اگرچہ ایکتا کے والد اپنے وقت کے سب سے بڑے سپر سٹار میں سے ایک تھے، لیکن ایکتا نے ان کی مدد نہیں لی اور اپنے دم پر انڈسٹری میں اپنی جگہ بنائی. @shobha9168!سوشل میڈیا پر خاندانی تصویر پوسٹ کرتے ہوئے ایکتا نے لکھا، “مدرس ڈے ہر روز ہوتا ہے اس لئے یہ پوسٹ میری باس پارٹنر اور ماں کے لئے ہے ۔جب ہم نے شروعات کی تھی تب لوگ یہ سوچ کر حیران تھے کہ کیوں میری کمپنی میں میرے مشہور والد صاحب کے بجائے ایک پروڈیوسر کے طور پر میری ماں کا نام تھا، لیکن میرے والد صاحب نے زور دے کر کہا کہ چونکہ ہم دونوں کام کر رہے ہیں اس لئے ہمیں اپنے ناموں کا ہی استعمال کرنا چاہئے! اور کچھ سالوں کے بعد، آج ہم یہاں کھڑے ہیں. میڈیا میں ہمارا ہی شاید پہلی ماں بیٹی کا سٹارٹ اپ ہے لیکن امید ہے کہ مستقبل میں اس کی تعداد بڑھ جائے گی۔دن کے شروعات میں، ایکتا نے خود کو دو بیٹوں کی ماں بتاتے ہوئے اپنے بھتیجے لکشیا اور بیٹے کی تصویر سوشل میڈیا پر شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ کس طرح وہ تین سال پہلے اپنے بھتیجے لکشیا کی پیدائش کے ساتھ ایک ماں بن گئی تھی اور اس سال اپنے بیٹے روی کی پیدائش کے ساتھ یہ ان کا پہلا ‘مدرس ڈے ‘ نہیں تھا کیونکہ ایکتا تین سالوں سے لکشیا کے ساتھ یہ دن منا رہی ہے. بھارتی ٹیلی ویڑن کی صنعت کی گیم-چینجر ایکتا کپور اب عالمی لیڈر کی 500+ لیگ میں شامل ہو گئی ہے! اس فورم پر بھارت سے واحد کنٹینٹ پروڈیوسر ہونے کے ناطے، ایکتا کپور یقینی طور پر ایک اننوویٹر ثابت ہوئی ہے. سروگسی کے ذریعے سنگل ماں بننا، جس سے اب تک ملک کی خواتین اچھوتی تھی ‘ایکتا نہ صرف کام کے معاملے میں ایک مثال ہیں، بلکہ زندگی کی ہر راہ پر ایک سچی انفلونسر ثابت ہوئی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper