ہندستان ہندوستان

مظفرپور میں اب تک چمکی بخارسے 28 بچوں کی موت

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-June-2019

مظفرپور(اسلم رحمانی) شمالی بہار میں چمکی بخار جس کو ایکیوٹ انسیفلائٹس اور جاپانی انسیفلائٹس کے نام سے بھی جانا جاتا ہے اس کے پھیلنے سے لوگ پریشان ہیں جس کی وجہ سے ابھی تک 28 بچوں کی موت واقع ہو چکی ہے۔ یہ اعداد و شمار سرکاری ہیں جبکہ غیر سرکاری اعداد و شمار کے مطابق بچوں کی اموات کی تعداد 50 ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ابھیتک چمکی بخار سے 103 بچے متاثر ہوئے ہیں۔آج موصول ہوئے اعداد و شمار کے مطابق ایس کے ایم سی ایچ اور کیجریوال میٹرنٹی اسپتال میں زیر علاج 9 بچوں کی موت واقع ہوئی ہے۔ اس جان لیوا چمکی بخار کا سب سے زیادہ اثر شمالی بہار کے مظفر پور، موتیہاری، شیو ہر، سیتامڑھی اضلاع میں ہے۔ بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے بھی ان حالات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے اپنے وزیر صحت سریش شرما کو ان اسپتالوں میں مریضوں کو دیکھنے کے لئے بھیجا ہے۔ واضح رہے شدید گرمی اور برسات سے قبل ہر سال بہار میں اس بیماری کا اثر دیکھنے کو ملتا ہے۔سال 2010 میں اس بخار سے 24 بچوں کی موت ہوئی تھی، سال 2011 میں 45 بچوں کی موت ہوئی تھی، سال 2012 میں 120 بچوں کی موت ہوئی تھی۔ سال 2013 میں 39 بچوں کی موت ہوئی تھی، سال2014 میں 86 بچوں کی موت ہوئی تھی، سال 2015 میں 11 بچوں کی موت ہوئی تھی، سال 2016 میں 21 بچوں کی موت ہوئی

About the author

Taasir Newspaper