سیاست سیاست

حق اطلاعات قانون کو کمزور کرنے کا کوئی ارادہ نہیں: جتندر سنگھ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 23-July-2019

نئی دہلی،(یو این آئی) حکومت نے حق اطلاعات قانون کو کمزور کرنے کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے پیر کو واضح کیا کہ وہ نظام میں زیادہ سے زیادہ شفافیت کے لانے کے تئیں پر عزم ہے اور اس کے پاس چھپانے کے لئے کچھ بھی نہیں ہے۔وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتندر سنگھ نے لوک سبھا میں حق اطلاعات بل 2019 پر بحث کے جواب میں یہ وضاحت کی۔ بعد میں ایوان نے صوتی ووٹ سے بل کو منظور کردیا۔ تاہم، ایوان کے سامنے ووٹنگ کے لئے بل کو پیش کیا گیا۔ اس کے حق میں 218 اور خلاف میں 79 ووٹ پڑے۔ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ مودی حکومت نے 2014 میں اقتدار میں آتے ہی ’زیادہ حکمرانی، چھوٹی حکومت‘ کے تئیں اپنے عزم کو واضح کردیا تھا۔ شفافیت، شہریوں کے حقوق، آسان بنانے، عوام کو آسانی اطلاعات تک رسائی اور اداروں کو زیادہ احترام اس اصول اہم عناصر ہیں۔ انہوں نے کہا، ’’یہ چوکیدار کی حکومت ہے۔ ہم چوکیدار کو مضبوط بنائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ اسی وجہ سے مودی حکومت نے 1500 ایسے قوانین ختم کردیئے ہیں جن کا کوئی استعمال نہیں رہ گیا تھا۔ اس میں گزیٹیڈ افسران سے دستاویزات کے تصدیق کرنے لزومیت کو ختم کرنا بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے ڈیجیٹلائزڈ کیا ہے اور حق اطلاعات کے استعمال کے لئے ایک موبائل اپلی کیشن بھی بنایا ہے۔ ڈاکٹر جتندر نے کہا کہ کوئی بھی شخص کسی بھی وقت حق اطلاعات کے تحت معلومات حاصل کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے تمام محکموں کو ہدایت دی ہے زیادہ تر معلومات آن لائن ویب سائٹس ڈال دیں۔ جس سے آر ٹی آئی کی ضرورت ہی کم ہوجائے گی ۔ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ یو پی اے حکومت نے اس قانون کو زیادہ مضبوط بنانے کے قواعد و ضوابط کاکوئی راستہ نہیں چھوڑا تھا۔ انہوں نے کہا کہ 2005 ء میں اس قانون بناتے وقت بہت جوش میں کہیں کچھ چھوٹ گیا تھا ۔ اسی کو درست کرنے کے لئے ترمیم لائے ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper