سیاست سیاست

راہل کے قدم کی تقلید دوسرے لیڈروں نے کیوں نہیں کی :جناردن

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 10-July-2019

نئی دہلی ،(یواین آئی) کانگریس کے سابق جنرل سکریٹری جناردن دیویدی نے لوک سبھا انتخابات میں کانگریس کی شکست کے بعد مسٹر راہل گاندھی کے صدر کے عہدے سے استعفی دینے کے فیصلہ کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ دیگر رہنما بھی اس شکست کے لیے ذمہ دار ہیں اور انکو بھی مسٹر گاندھی کی طرح اپنے عہدوں سے مستعفی ہونا چاہئے تھا۔مسٹر دیویدی نے منگل کو یہاں صحافیوں سے بات چیت میں کہاکہ مسٹر گاندھی کو پارٹی کی شکست کی ذمہ داری لیتے ہوئے استعفی دینے کی پیش کش کرنے سے پہلے صدر کے عہدے کی ذمہ داری کسی اور کو دینے کی پیش کش کرنی چاہئے تھی اور پھر اس پر پارٹی کی ورکنگ کمیٹی میں غوروخوض ہوتا لیکن مسٹر گاندھی نے ایسا نہیں کیااور نہ ہی ورکنگ کمیٹی نے ڈیٹرھ ماہ سے اس بارے میں کوئی فیصلہ کیاہے ۔انھوں نے کہاکہ مسٹر گاندھی کو پارٹی کو چلانے کے لیے کوئی بندوبست ضرور کرنا چاہئے تھا۔کانگریس کے سینئر لیڈر نے اس سلسلہ میں محترمہ سونیا گاندھی کا ذکر کیا اور کہاکہ کانگریس صدر رہتے ہوئے جب وہ بیرون ملک گئی تھیں تو انکی غیر موجودگی میں پارٹی کے کام کاج کی ذمہ داری انھوں نے چارلوگوں کو سونپ دی تھی ۔کانگریس صدر کے عہدے سے استعفی دینے سے پہلے پارٹی کے کام کاج کا اسی طرح کا بندوبست مسٹر گاندھی کو بھی کرنا چاہئے تھا۔کانگریس لیڈر نے کہاکہ مسٹر گاندھی تکنیکی اعتبار سے ابھی بھی کانگریس کے صدر ہیں لیکن ورکنگ کمیٹی کو جلد سے جلد میٹنگ کرکے پارٹی صدر مقررکرنا چاہئے ۔انھوں نے کہاکہ پارٹی کی شکست کے لیے مسٹر گاندھی تنہا ذمہ دار نہیں ہیں بلکہ اس کے لیے دیگر لیڈر بھی ذمہ دار ہیں ۔مسٹر گاندھی نے اخلاقیات کا ثبوت دیتے ہوئے عہدے سے استعفی دیکر بڑا قدم اٹھایاہے لیکن دیگر لیڈروں نے ایسا نہیں کیاہے ۔مسٹر دیویدی نے کہاکہ کانگریس کی موجودہ حالت کو دیکھ کر انھیں بہت تکلیف ہورہی ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper