سیاست سیاست

پیسہ واپس نہیں کرنے کی صورت میں سہارا انڈیاپرہوگامقدمہ :مودی

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 22-July-2019

پٹنہ: بہارقانون سازیہ کے مانسون اجلاس میں آج حزب مخالف نےایوان کے باہر اور اندر زوردار ہنگامہ کیا۔ ممبران نے ریاست میں بھیڑکے حملے میں موت پر ہنگامہ کرتے ہوئے حکومت سے سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ وقفہ سوال کے دوران نائب وزیراعلیٰ سشیل کمار مودی نے اعلان کیا کہ اگر سہارا انڈیا کے ذریعہ پیسہ واپس نہیں کیاگیا تو اس کے خلاف معاملہ درج کیاجائے گا۔ اسی چند سوال کو لے کر آج اپوزیشن نے ایوان کی کارروائی کے دوران زوردار ہنگامہ کیا۔ بایاں محاذ کے ممبران نے ہجومی تشدد پر حکومت سے سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی اپوزیشن ممبران ہنگامہ کرنے لگے ۔آرجے ڈی سمیت دیگر اپوزیشن ممبران نے ہجومی تشد د پرتحریک التوا کی تجویز لا کر بحث کرانے کا مطالبہ کیا۔ ساتھ ہی حکومت سےجواب دینے کی مانگ کی۔ اسمبلی اسپیکروجئے کمار چودھری نے ممبران سے مقررہ وقت پر معاملے کو اٹھانے کوکہا۔ انہوں نے کہا کہ وقت پر اٹھائیں گے تو مسئلے کا حل ہوسکتاہے۔ اس کے بعد انہوں نے تحریک التوا کی تجویز کو نامنظور کردیا۔ وقفہ سوالات کے دوران ہی آرجے ڈی کے کمار سروجیت کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے نائب وزیراعلیٰ سشیل کمار مودی نے کہا کہ اپریل سے مئی 2019 تک سہارا انڈیا کے خلاف قریب 6100درخواستیں ملی ہیں۔ اب تک ان میں سے صرف 50فیصد سے بھی کم درخواستوں کا نبٹارہ کیاگیاہے۔ انہوں نے کہا کہ پٹنہ میں سب سے زیادہ درخواستیں ملی ہیں۔ا نہوں نے ایوان کو بتایاکہ حکومت نےسبھی ڈی ایم کو صارفین کی رقم ادا کرنے کو لے کر کمپنی سے بات کرنے کو کہا ہے ۔ ساتھ ہی کہا ہے کہ اگر کمپنی کی جانب سے صارفین کی جمع رقم کو واپس نہیں کیاگیا تو پھر حکومت معاملہ درج کر آگے کی کارروائی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم صارفین کی رقم واپس کرانےکےہرممکن کوشش کریں گے۔

About the author

Taasir Newspaper