سیاست سیاست

راج ٹھاکرے کو ای ڈی کا نوٹس، 22 اگست کو حاضر ہونے کا حکم

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 20-August-2019

ممبئی،(ایجنسی): انفراسٹرکچر لیزنگ اینڈ فائننشیل سروسز (آئی ایل اینڈ ایف ایس) کی جانب سے دادرمیں واقع کوہ نور سٹی این ایل کمپنی کو 8690 کروڑ روپے قرض دینے اور سرمایہ کاری کے معاملے میں ای ڈی نے ایم این ایس سربراہ راج ٹھاکرے کو نوٹس جاری کیا ہے۔اس نوٹس کے ذریعے 22 اگست کو پوچھ گچھ کے لئے حاضر ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ دادر میں کوہ نور ملز کو خریدکر وہاں کوہ نور اسکوائر ٹاور کھڑا کیا گیا ہے۔ اس زمین کو کوہ نور مل خریدنے کے لئے شیوسینا لیڈر منوہر جوشی کے بیٹے انمیش جوشی، ایم این ایس سربراہ راج ٹھاکرے اور ان کے ایک اور بزنس ساتھی نے مل کر ایک کنسورشیم بنایا تھا۔ اس میں آئی ایل اینڈایف ایس گروپ نے بھی 225 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کی تھی۔ اس کے بعد سال 2008 میں اس نے بھاری مقدار میں نقصان اٹھاتے ہوئے کمپنی نے اپنیشیئر کو محض 90 کروڑ روپے میں سرینڈر کر دیا۔ اسی سال راج ٹھاکرے نے بھی اپنے اسٹاک فروخت دیے تھے اور کنسورشیم سے باہر نکل گئے تھے۔ اپنا اسٹاک سرینڈر کرنے کے بعد بھی آئی ایل اینڈ ایف ایس گروپ نے کوہ نور سٹی این ایل کو ایڈوانس لون دیا، جسے مبینہ طور پر کوہ نور سٹی این ایل چکا نہیں پایا۔ اس کے بعد سال 2011 میں کوہ نور سی ٹی این ایل کمپنی نے اپنی کچھ املاک بیچ کر 500 کروڑ روپے کا لون ادا کرنے کے معاہدہ پر دستخط کئے۔اس معاہدے کے بعد آئی ایل اینڈ ایف ایسگروپ نے کوہ نور سٹی این ایل کو 135 کروڑ روپے کا مزید لون دینے کی بات ای ڈی کی تحقیقات میں سامنے آئی۔ بتایا جا رہا ہے کہ راج ٹھاکرے سے پوچھ گچھ کے بعد ای ڈی ان سے وابستہ دیگر لوگوں سے بھی پوچھ گچھ کر سکتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper