کھیل

سندھو-سائنا پرتمغہ کی امیدوں کا دارومدار

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 19-August-2019

باسل،(یو این آئی ) ہندوستانی بیڈمنٹن کی دو کوئینز پی وی سندھو اور سائنا نہوال پر پیر سے یہاں شروع ہو رہی عالمی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں ایک بار پھر ملک کی تمغہ امیدوں کا دارومدار رہے گا۔دونوں کو ہی اس باوقار مقابلہ میں اپنے پہلے خطاب کی تلاش ہے اور ان کا سیمی فائنل میں مقابلہ ہو سکتا ہے۔ اولمپک سلور فاتح سندھو نے اس ٹورنامنٹ میں 2013 اور 2014 میں کانسی کا تمغہ جیتے تھے جبکہ 2017 اور 2018 میں انہوں نے چاندی کا تمغہ جیتے تھے جبکہ سائنا 2015 میں چاندی کا تمغہ اور 2017 میں کانسی کا تمغہ جیت چکی ہیں۔ٹورنامنٹ میں کوارٹر فائنل تک راہ میں حائل رکاوٹیں پار کرنے پر دونوں ہندوستانی کھلاڑیوں کا سیمی فائنل میں مقابلہ ہو سکتا ہے۔ لیکن سیمی فائنل سے پہلے سندھو کے سامنے کوارٹر فائنل میں سابق نمبر ایک اور دوسری سیڈ چینی تائی پے کی تائی جو ینگ کی سب سے بڑی رکاوٹ رہے گی۔ اگرچہ سندھو کو اس بات سے راحت ملے گی کہ ان کی حریف اسپین کی کیرولینا مارین چوٹ کی وجہ اس ٹورنامنٹ سے ہٹ گئی ہیں۔دونوں ہندوستانی کھلاڑیوں کو پہلے راؤنڈ میں بائی ملی ہے۔ دوسرے راؤنڈ میں سندھو کا مقابلہ چینی تائی پے کی پائی یو پو یا بلغاریہ کی لنزا جیچري کے درمیان مقابلے کی فاتح سے ہوگا۔ تیسرے راؤنڈ میں سندھو کا سامنا نویں سیڈ امریکہ کی بےيوئي جانگ سے ہو سکتا ہے۔سائنا کا دوسرے راؤنڈ میں سوئٹزرلینڈ کی سبرینا کوٹ اور ہالینڈ کی وشچ اجبرگن کے درمیان ہونے والے میچ کی فاتح سے مقابلہ ہوگا۔ تیسرے راؤنڈ میں سائنا کا مقابلہ 12 ویں سیڈ ڈنمارک کی ٹیکو سے ہو سکتا ہے۔سندھو اس سال بے شک اب تک کوئی خطاب نہ جیت سکی ہوں لیکن وہ اس چمپئن شپ میں تمغہ کی ہیٹ ٹرک بنانے کے ارادے سے اتریں گي۔ سندھو نے عالمی چمپئن شپ کی تیاری کے لیے حال میں تھائی لینڈ اوپن سے اپنا نام واپس لے لیا تھا۔ سندھو کو عالمی چمپئن شپ میں پانچویں سیڈ دی گئی تھی۔ سندھو اس مقابلہ میں چار بار کی میڈلسٹ ہیں۔اولمپک سلور فاتح سندھو نے اس ٹورنامنٹ میں 2013 اور 2014 میں کانسی کا تمغہ جیتے تھے جبکہ 2017 اور 2018 میں انہوں نے چاندی کا تمغہ جیتے تھے۔ سندھو گزشتہ سال کے آخر میں ورلڈ ٹور فائنلس میں خطاب جیتنے کے بعد اپنے پہلے خطاب کی تلاش میں ہے۔ وہ گذشتہ ماہ انڈونیشیا اوپن کے فائنل میں پہنچی تھیں لیکن انہیں جاپان کی اکانے یاماگوچی سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اس کے ٹھیک بعد وہ جاپان اوپن کے کوارٹر فائنل میں یاماگوچی سے ہی ہاری تھیں۔چمپئن شپ میں ہندستان کو سندھو کے علاوہ سائنا نہوال سے بھی امیدیں رہیں گی۔ اگرچہ سائنا تھائی لینڈ اوپن کے دوسرے راؤنڈ میں ہار گئی تھیں۔ سائنا 2015 میں چاندی کا تمغہ اور 2017 میں کانسی کا تمغہ جیت چکی ہیں۔ سائنا کو ٹورنامنٹ میں آٹھویں سیڈ دی گئی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper