سیاست سیاست

عظیم ہسیتوں کے احترام میں عوام کو تکلیف دینا نامناسب:مایاوتی

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 23-August-2019

لکھنؤ:(یواین آئی) بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی) سپریمومایاوتی نے دہلی میں روی داس کی قدیم مندر توڑے جانے کے بعد بھیم آرمی کی جانب سے کئے گئے پرتشدد مظاہرے سے خودکو الگ کرتے ہوئے کہا کہ توڑ پھوڑ سے عوام الناس کو ہی نقصان ہوتا ہے ہمیں سنتوں،گروؤں و عظیم ہسیتوں کے احترام میں معصوم لوگوں کو کسی بھی قسم کی تکلیف یا نقصان نہیں پہچانا چاہئے۔بی ایس پی سپریمو نے پارٹی کارکنوں سے اپیل کی کہ وہ کسی بھی قسم کے پرتشدد مظاہرے میں شرکت نہ کریں اور قانون کو اپنے ہاتھ میں نہ لیں۔رویداس مندر کے توڑنے کے خلاف کئے جارہے مظاہرے کی قیادت بھیم آرمی کے چیف چندر شیکھر کررہے تھے جسے دہلی پولیس نے تغلق آباد کوچ کرتے وقت گرفتار کرلیا تھا۔جمعرات کو اپنے یک بعد یگرے کئی ٹوئٹس میں بی ایس پی سپریمو نے لکھا کہ’’ بی ایس پی افراد کے قانون کو اپنے ہاتھ میں نہ لینے کی جو قدیم روایت چلی آرہی ہے وہ آج بھی برقرار ہےجبکہ دوسری پارٹیوں وتنظیموں کے لئے یہ عام بات ہے۔ ہمیں اپنے سنتوں،گروؤں و عظیم ہسیتوں کے احترام میں معصوم لوگوں کو کسی بھی قسم کی تکلیف یا نقصان نہیں پہچانا چاہئے۔انہوں نے آگے لکھا کہ ’’اور یہی وجہ ہے کہ کل دہلی میں خاص کر تغلق آباد علاقے میں جو کچھ توڑ پھوڑ وغیرہ کے واقعات رونما ہوئے ہیں وہ نامناسب ہیں اور اس کا بی ایس پی سے کچھ بھی لینا دینا نہیں ہے۔بی ایس پی آئین و قانون کا ہمیشہ احترام کرتی ہے اور بی ایس پی کی جدوجہد قانون کے دائرے میں ہی رہ کر ہوتا ہے‘‘۔انہوں نے اپنے دیگر ٹوئٹ میں لکھا کہ اگر حکومت نے کہیں بھی دفعہ 144 کو نافذ کیا ہے تو بی ایس پی کے کارکن کسی بھی قسم کے قانون کی خلاف ورزی نہیں کریں گے۔

About the author

Taasir Newspaper