کھیل

ٹسٹ چیمپئن شپ چیلنجنگ ثابت ہوگا :وراٹ کوہلی

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 22-August-2019

اینٹيگا،(یواین آئی) ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے کہا ہے کہ حالیہ برسوں میں ٹیسٹ کرکٹ کافی اہم مقابلہ بن گیا ہے اور اب ٹیسٹ چیمپئن شپ نے اس پرفارمیٹ کو کافی چیلنجنگ بنا دیا ہے۔انگلینڈ اور آسٹریلیا کے درمیان یکم اگست سے شروع ہوئی ایشز سیریز کے ساتھ ہی ٹیسٹ چیمپئن شپ کا آغاز ہو چکا ہے اور ہندوستان کا اس چیمپئن شپ میں مہم 22 اگست سے ویسٹ انڈیز کے خلاف ہونے والے پہلے ٹیسٹ میچ سے شروع ہوگی۔ ان چار ٹیموں کے علاوہ سری لنکا اور نیوزی لینڈ کا اس چیمپئن شپ میں سفر شروع ہو چکا ہے۔ دونوں ٹیموں کے درمیان دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کھیلی جارہی ہے۔وراٹ نے کہا ہے سبھی 9 ٹیموں کے لئے اس چیمپئن شپ کے تمام مقابلے کافی اہم ہیں کیونکہ سال 2021 میں صرف دو ٹیم اس چیمپئن شپ کا فائنل کھیلے گی۔وراٹ نے کہا، ٹیسٹ چیمپئن شپ کی وجہ سے ٹیسٹ میچ اب مزید چیلنجنگ ہوگیا ہے اور اس سے ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کے مقصد کو فروغ ملے گا۔میرے خیال سے یہ چیمپئن شپ کرانے کا فیصلہ صحیح تھا اور اس فیصلے کو صحیح وقت پر لیا گیا ہے۔وراٹ نے کہا، “ٹیسٹ کرکٹ کے سلسلے میں لوگ کئی طرح کی باتیں کر رہے ہیں کہ ٹیسٹ کرکٹ ختم ہو رہا ہے. لیکن میرے خیال سے ٹیسٹ کرکٹ گزشتہ چند برسوں میں کافی مشکل ہو گیا ہے۔ اب یہ کھلاڑیوں پر منحصر ہے کہ وہ اس چیلنج کو کیسے جیتتے ہیں۔ “ہندوستانی کپتان نے کہا، “میچ میں مقابلہ ہی اس ٹیسٹ چیمپئن شپ کو دلچسپ بنائے گا۔ مقابلے میں میچ کے ڈرا ہونے کی امید کم رہے گی اور اگر میچ ڈرا ہوتا بھی ہے تو مقابلہ کافی دلچسپ ہوگا کیونکہ دونوں ہی ٹیمیں پوائنٹس حاصل کرنے کی کوشش کرے گی۔ “وراٹ نے اگرچہ تسلیم کیا کہ بلے باز اپنی صلاحیت کے مطابق کارکردگی نہیں کر پا رہے ہیں اور ٹیسٹ چیمپئن شپ ان کے لئے مشکل ثابت ہوگی۔ہم نے گزشتہ ڈیڑھ سالوں میں کافی سیریز کھیلی ہیں اور یہ کافی چیلنجنگ رہا ہے۔ ہم انگلینڈ کے ساتھ ہارے لیکن ٹیم نے آسٹریلیا میں جیت حاصل کی کیونکہ بلے باز اپنی فارم میں تھے۔ہندوستانی کپتان نے کہا، “جہاں تک بلے بازی کی بات ہے ہمیں ایک بطور ٹیم کی شکل میں بلے بازی کرنی ہوگی اور ایک مضبوط اسکور بنا نا ہوگا جس سے گیند بازوں کو اپنا کام کرنے کا موقع مل سکے۔ ویسٹ انڈیز کی بولنگ اس وقت کافی مضبوط ہے اور ہمارے بلے بازوں کو سیریز جیتنے کے لئے اپنی صلاحیت کے مطابق کھیلنا ہوگا۔

About the author

Taasir Newspaper