ہندستان ہندوستان

چوری کے الزام میں دلت نوجوان کی پٹائی، موت

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 10-August-2019

پٹنہ:ریاست میں بڑھتے ہجومی تشدد کے تحت راجدھانی پٹنہ کے نوبت پور میں بھی بچہ چوری کے الزام میں ایک شخص کو بھیڑ نے اس قدر پٹائی کردی کہ اسپتال لے جانے کے دوران ہی اس شخص نے دم توڑ دیا۔ مشتعل بھیڑ محمد پور گاؤں میں اچانک مشتعل ہوگئی اور بچہ چوری کے الزام میں پکڑے گئے ایک شخص کو ہاتھ پیچھے کی طرف کرکے باندھ کر جم کر بے رحمی سے پٹائی شروع کردی۔ گاؤں والے نوجوانوں کی ٹولی موبائل میں ویڈیو بنانے میں لگے رہے لیکن کسی نے بھیڑ میں گھرے اس نوجوان کی بات سننے کی زحمت نہیں کی۔ خون سے لت پت نوجوان اپنے آپ کو بے قصور بتاکر ہاتھ پیڑ جوڑتارہا اور گڑگڑاتے رہالیکن کوئی سننے کو تیار نہیں ہورہاتھا۔ آخر کار پٹائی سے نوجوان نے دم توڑ دیا۔ پولس کو اطلاع ملنے کے باوجود وہاں نہیں پہنچ پائی۔ ایسے میں راجدھانی سے محض 15کیلومیٹر دور نوبت پور میں مشتعل بھیڑ نے ایک نوجوان کا قتل کردیا۔ جب بہار کے ڈی جی پی او ر پٹنہ کی ایس ایس پی لگاتار پولس انتظامیہ اور عوامی نمائندوں کے ساتھ دانشور طبقہ کے لوگوں سے اپیل کررہی ہے کہ بچہ چوری کے الزام کسی کی پٹائی نہ کی جائے ۔ بلکہ مقامی تھانہ پولس کے حوالہ کردیاجائے۔ بھیڑ کے ذریعہ پیٹ کر مار ڈالے گئے نوجوان کے ہاتھ میں کرشنا مانجھی گودھنا گودھا ہوا دیکھاگیاہے۔ جس سے پتہ چلا کہ وہ کوئی دلت نوجوان وہیں نوبت پور تھانہ دار سمراٹ دیپک نے بتایاکہ نوجوان کو بچہ چور کے افواہ میں پٹائی کی اطلاع ملنے پولس پہنچی اور بھیڑ سے بچاکر اسپتال لے آئی ۔ تب تک وہ زندہ تھا۔ نازک حالت میں اسے پٹنہ کے لئے ریفر کیاگیا۔ پولس بھیڑ میں شامل لوگوں کی گرفتاری کے لئے کارروائی کررہی ہے۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ کسی بھی شخص کو بچہ چوری کے الزام میں نہیں پیٹاجائے۔

About the author

Taasir Newspaper