ہندستان ہندوستان

سیلاب کی زد میں مدھیہ پردیش،آج بھی راحت کی امید نہیں

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 11-September-2019

بھوپال،(یواین آئی)مدھیہ پردیش میں پچھلے تین دن سے مسلسل جاری بارش کے درمیان ندی نالوں میں طغیانی کی وجہ سے اب تک آدھادرجن سے بھی زیادہ لوگوں کے مرنےکی اطلاع ہے۔مقامی موسم مرکز نے آج ریاست کے 8اضلاع میں کہیں کہیں بارش ہونے،دیگر 8اضلاع میں بہت زیادہ بارش ہونے اور دیگر 16اضلاع میں شدید بارش ہونے کی وارننگ جاری کی ہے۔دارالحکومت بھوپال میں پچھلے تقریباً تین دن سے بارش کا قہر جاری ہے۔یہاں آسمان میں پوری طرح بادلوں کا ڈیرا ہے اور رک رک کر بارش جاری ہے۔سیلاب سے بہت زیادہ متاثر ویدیشا ضلع میں مسلسل بارش کی وجہ سے مختلف مقامات پر کل 15بستیوں میں پانی بھرا ہے،جہاں 5سے 6فٹ پانی بھرا ہے۔یہاں بیتوا ندی پل سے 15سے 20فٹ اوپر بہہ رہی ہے۔رائے سین ضلع کا بھی مختلف مقامات پر ندیوں اور نالوں میں طغیانی آنے کی وجہ سے ویدیشا اور بھوپال سے سڑک سے رابطہ ٹوٹا ہوا ہے۔یہاں کئی مقامات پر ندیاں پل سے تقریباً 10فٹ اوپر تک بہہ رہی ہیں۔جبل پور ضلع کے گواری گھاٹ پر کل شام نرمدا میں نہاتے وقت ساحل پٹیل (19)نام کا نوجوان ڈوب گیا۔دیر رات اس کی تلاش کرنےکے بعد بھی اس کا کچھ پتہ نہیں چل سکا تھا۔وہیں سیہور ضلع میں ایک برساتی نالے میں کار کے گرنے سے اس میں چار لوگوں کی موت ہوگئی۔اسی طرح سیونی ضلع میں دو لوگ بین گنگا ندی میں کار سمیت بہہ گئے۔ان کی لاش مل گئی ہیں۔شدید بارش کی وجہ سے کل دارالحکومت بھوپال سمیت،سیہور،رائے سین اضلاع میں اسکول اور دیگر تعلیمی اداروں میں ضلع انتظامیہ نے چھٹی کا اعلان کردیاتھا ۔ساگر ضلع میں بھی شدید بارش کی وجہ سے نچلی بستیوں میں جگہ جگہ پانی بھرا ہوا ہے۔یہاں گڑھ کوٹہ کے نالے میں بہے ایک بچے کا کچھ پتہ نہیں چل سکا ہے۔جبل پور کے برگی باندھ سے پانی چھوڑے جانے کی وجہ سے نرمدا ندی میں جگہ جگہ طغیانی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper