سیاست سیاست

سپریم کورٹ کے فیصلے سے سماج کا ہر طبقہ مطمئن: کلیان سنگھ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-Nov-2019

لکھنؤ:(یواین آئی) اترپردیش کے سابق وزیر اعلی و بابری مسجد انہدام معاملے میں ملزم کلیان سنگھ نے پیر کو اجودھیا قضیہ میں سپریم کورٹ کی جانب سے دئے گئے فیصلے کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ عدالت عظمی کے اس فیصلے سے سماج کا ہر طبقہ مطمئن ہے۔رام للا کے درشن کےلئے جلد ہی اجودھیا جانے کا اعلان کرتے ہوئے کلیان سنگھ نے کہا کہ عدالت نے قانون کے عین مطابق ایک پرانے قضیہ کا تصفیہ کردیا۔رام مندر پرسپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد بی جے پی اپنی سیاسی پکڑ کو کھو دے گی دعوے کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسٹر سنگھ نے کہا کہ رام مندر تحریک کبھی بھی سیاسی معاملہ نہیں تھا۔ اسے عقیدےاور کلچر سے جوڑا جاسکتا ہے لیکن اس کا کوئی سیاسی پہلو نہیں تلاشا جاسکتا۔بابری مسجد انہدام معاملے میں سی بی آئی کی جانب سے ملزم بنائے گئے مسٹر سنگھ نے یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا میں رام بھکت ہوں اور اول دن سے ہی رام مندر کی تعمیر کا خواب دیکھ رہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ان کی خواہشوں کی تکمیل کی ہے اور جلد ہی اجودھیا میں رام جنم بھومی پر ایک مندر کی تعمیر کی جائےگی۔راجستھان کے سابق گورنر نے کہا کہ رام کو روٹی سے منسلک کیا جانا چاہئے اور اب یہ کافی بڑا کام ہے کہ اجودھیا کو ترقی دی جائے جس سے وہاں کے ہرفرد روزگارمل سکے۔رام مندر کی سنگ بنیاد ان کے ہاتھوں سے رکھے جانے کے سوال پر بی جے پی لیڈر نے کہا کہ’’ اس معاملے میں کوئی تنازع نہیں ہے کہ سنگ بنیاد کون رکھے گا۔سنگ بنیاد یوگی آدتیہ ناتھ اور نریندر مودی کوئی بھی رکھ سکتا ہے۔ لیکن پہلے ٹرسٹ کے اراکین کے ناموں کو اعلان ہونے دیجئے اس کے بعد آپ کو پتہ چلے گا کہ سنگ بنیاد کون رکھے گا۔بابری مسجد انہدام کے معاملے میں ایل کے اڈوانی، مرلی منوہر جوشی،اوما بھارتی،ونے کٹیار کے ساتھ چل رہے مقدمے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں مسٹر سنگھ کا کہناتھا اس معاملے میں لکھنؤ کی سی بی آئی کورٹ میں ٹرائل چل رہا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper