ہندستان ہندوستان

دربار شریف میں قطب بنگالہ کا عرس شریف

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 03-Dec-2019

کولکاتہ(محمد نعیم) برصغیر کے مشہور ولی قطب بنگالہ سیدنا مولانا سید شاہ غلام مصطفیٰ حضرت القادری البغدادی بڑے حضور کا 27 واں سالانہ عرس پاک ان کے سجادہ نشین حضرت مولانا سید شاہ ضلال مرشد القادری البغدادی کے زیرِ سرپرستی ٢٨,٢٩ ربیع الأول مطابق 26 اور۔ 27 نومبر کو ان کی رہائش گاہ دربار شریف قادریہ ٢٢ مفید السلام لین کولکاتہ میں انتہائی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا جس میں بلاامتیاز مذہب و ملت ملک کے گوشے گوشے سے ہزاروں کی تعداد میں مردین و مقتدین نے شرکت کی۔مولانا مسعود الرحمٰن قادری کے تلاوتِ قرآن کریم کے بعد خانقاہ شریف قادریہ کولکاتہ کے پیر طریقت حضرت مولانا سید شاہ فادی الارشاد رشود علی القادری نے عرس مبارک کا آغاز فرمایا اور اپنی تقریر سے سامعین کو محفوظ فرمایا۔ ایس ایم ہائی مدرسہ کے ہیڈ ماسٹر سید عاشق الباری القادری، مولانا سید عطاء الباری القادری، بنگلہ اخبار”آلور دیشا” کے مدیر سید منہاج حسین الحسینی نے میلاد شریف پڑھا۔ دربار شریف کے نائب سجادہ نشین پیر زادہ مولانا پروفیسر ڈاکٹر سید مصطفیٰ مرشد جمال شاہ القادری نے اپنی عالمانہ تقریر میں حضور قطب بنگالہ کی حیات طیبہ پر روشنی ڈالی، علاوہ ازیں دیگر مشاہیر علمائے کرام کی تقریریں ہوئیں۔حکومت مغربی بنگال کے ریاستی وزیر برائے بجلی شوبھن دیب چٹوپادھیائے، وزیر مچھلی پالن چندر ناتھ سنہا، وزیر امور صارفین سادھن پانڈے، وزیر برائے زراعتی مارکیٹنگ تپن داس گپتا، مغربی بنگال وقف بورڈ کے چیئرمین و ممبر اسمبلی جسٹس محمد عبدالغنی، مسٹر جسٹس میر داراشکوہ، مغربی بنگال مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے صدر ابو طاہر قمرالدین، محکمہ اقلیتی امور کے اسپیشل سکریٹری شکیل احمد، سابق اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس و مسلم انسٹیٹیوٹ کے جنرل سیکریٹری نثار احمد، سابق ضلع و سیشن جج قاضی رفیق احمد و دیگر معززین نے اپنی تقریر کے ذریعے قطب بنگالہ بڑے حضور کو خراج عقیدت پیش کیا۔آخر میں سجادہ نشین پیر صاحب سید شاہ ظلال مرشد القادری نے اپنی نورانی تقریر کے بعد خصوصی دعا فرمائی اور تقریب کے اختتام پر حاضرین میں تبرکات تقسیم کئے گئے۔

About the author

Taasir Newspaper