ہندستان ہندوستان

سابق ڈی جی سی ایس آئی آر نے پیچیدہ سائنسی سوالات کو حل کرنے کیلئے دیا زور

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 03-Dec-2019

نئی دہلی (پریس ریلیز)پروفیسر سمیر کے برہماچاری، سابق ڈائریکٹر جنرل سی ایس آئی آر اور آئی جی آئی بی کے بانی ڈائریکٹر نے پیچیدہ سائنسی سوالات کے حل کیلئے بین الضابطہ انداز کی ضرورت پر زور دیا۔ہیومن جینوم پروجیکٹ کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس نے خاص طور پر لائف سائنسز ریسرچ اور عام طور پر ہیلتھ کیئر کو کافی متاثر کیا ہے۔ انہوں نے ایچ جی پی سے پیدا ہونے والے نتائج اور نئی راہوں کی وسعت پر بھی روشنی ڈالی۔پروفیسر برہماچاری 29 نومبر 2019 کو سینٹینری کیلئے ممتاز لیکچر سیریز میں، 29 نومبر 2019 کو پوسٹ جینومک ایرا میں میڈیسن کا کردار، اعداد و شمار اور مصنوعی ذہانت کے عنوان سے شعبہ بایوٹکنالوجی، جامعہ ملیہ اسلامیہ کے زیر اہتمام ایک عوامی لیکچر سے خطاب کرر ہے تھے۔ پروفیسر برہما چاری نے اپنے لیکچر کا آغاز پوسٹ ڈی این اے ایرا میں سائنس کی پیشرفت کی بابت سامعین کو تفصیل سے بتایا۔پروفیسر براہمچاری نے مزید کس طرح جینومکس دوا سازی اور شخصی طب کی بنیاد کو فروغ دیتا ہے جیسے نکات پر اپنے تجربات شیئر کئے۔اپنے منصوبے کے بار ے میں بات کر تے ہوئے اوپن سورس ڈرگ ڈسکوری (او ایس ڈی ڈی) پروفیسر برہماچاری نے کہا کہ ان کا یہ تصور تپ دق کی دستیاب حیاتیاتی اور جینیاتی معلومات کو باہمی طور پر ایک ساتھ جمع کرنا تھا، تاکہ نظامِ حیاتیات کا استعمال کرکے منشیات کی دریافت کے عمل میں تیزی لائی جا ئے او ایس ڈی ڈی کو ہجوم کی سورسنگ کا پہلا منصوبہ سمجھا جاتا ہے جس کی سربراہی ہندوستانی سائنسدان کرتے ہیں۔انہوں نے طبی علوم میں اعداد و شمار نیز تجز یہ کے اثرات پر روشنی ڈالی اور آنے والے برسوں میں طبی حالات کی تشخیص اور علاج کیسے بہتر ہوسکتا ہے اس پر بات چیت کی۔مصنوعی ذہانت اور میڈ یسن میں اس کے کردار کے بارے میں بات کرتے ہوئے برہمچاری نے اے آئی انسانی زندگیوں کی ترقی کیلئے علاج کی حکمت عملی کو کس طرح بہتر بنا یا جا سکتا ہے، اس پر بھی اپنے رائے رکھی، انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اے آئی کا استعمال منشیات کی دریافت کے عمل میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے ۔انہوں نے اس لیکچر کا اختتام جامعہ کے طلبا کو اپنے مستقبل کے منصوبوں میں فعال طور پر حصہ لینے اور ان کے ساتھ تعاون کر نے کی ترغیب د ی۔ لیکچر کی صدارت پروفیسر ایم سمیع ڈین، فیکلٹی نیچرل سا ئنسز، جامعہ نے کی، استقبالیہ خطبہ پروفیسر سیمی فرحت بشیر، ڈین اسٹوڈنٹس ویلفیئر نے دیا۔ پروفیسر برہماچاری کا استقبال ایچ او ڈی بائیوٹیکنالوجی کے پروفیسر محفوذالحق نے کیا۔لیکچر میں فیکلٹی ممبران، طلباء اور محققین نے نہ صرف شعبہ بایوٹیکنا لو جی، بلکہ دوسرے شعبوں اور یونیورسٹیوں کے افراد نے بھی شرکت کی۔لیکچر کا اختتام پروفیسر کے محفوذ الحق کے کلمات تشکر سے ہوا۔

About the author

Taasir Newspaper