شہریت ترمیمی ایکٹ، این آر سی اور این پی آر کی مخالفت میں مسلم لاء کونسل کا احتجاجی جلسہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 31-Dec-2019

ہوڑہ(محمد نعیم) وزیر داخلہ امیت شاہ کا قومی سطح پر متنازع شہریت قانون اور این آر سی کے نفاذ کا اعلان کو لے کر مسلم لاء کونسل کے زیراہتمام ہوڑہ کے واٹ کنس لین موڑ پر شہریت ایکٹ، این آر سی اور این پی آر کی مخالفت میں ایک احتجاجی جلسہ کا انعقاد امام جامع مسجد کربلا کے مولانا عبدالحمید حبیبی کی قیادت میں ہوا۔ جلسے کا آغاز مولانا قاری لقمان کے تلاوتِ کلام پاک سے ہوا۔ افتتاحی تقریر مسلم لاء کونسل کے رکن ثقلین حیدر نے کی، جنہوں نے عوام الناس کو ضرر رساں شہریت ایکٹ اور این آر سی کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ دستاویزات کی بنیاد پر ملک کو عالمی سطح پر بدنام کیا جا رہا ہے۔ سپریم کورٹ کے سینئر ایڈوکیٹ پرتیک مجمدار جوگی نے ملک کے جمہوری آئین کے حوالے سے بتایا کہ ہندوستان کے ہر شہری کو یکساں حقوق حاصل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فسطائی طاقتوں کی تمام ریشہ دوانیوں کے باوجود ملک کی قومی یکجہتی برقرار رہے گی اور ملک کو ٹکڑا نہیں ہونے دیں گے۔ مسلم لاء کونسل کے صدر عبدالحمید حبیبی نے کہا کہ ہندوستان کے امن پسند لوگ بی جے پی جیسے فرقہ پرست طاقتوں کے عزائم کو خاک میں ملا دیں گے اور ان کا ناپاک منصوبہ کبھی کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا جبکہ کلکتہ ہائی کورٹ کے وکیل توصیف خان نے این آر سی اور این پی آر کی مماثلت کے مضر اثرات سے ہوڑہ کے عوام کو روشناس کرایا۔ سماجی خدمت گار پارتھو بھومک نے اس ایکٹ کو ہندوستان کی تاریخ میں کالا قانون سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ اس قانون سے صرف مسلمانوں کا خسارہ نہیں ہوگا بلکہ ہندو بھی اس کے بد اثرات سے محفوظ نہیں رہ سکیں گے۔ مرکزی حکومت کی طرف سے مسلمانوں کے لئے دستورِ ہند میں حاصل آئین کی پامالی کو لے کر ہائی کورٹ کے سینئر وکیل شاہد امام نے آگاہ کیا اور کہا کہ ہم عوام اسے کسی قیمت پر برداشت نہیں کریں گے۔ انہوں نے حکومت وقت کے خلاف اپنے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کو دستورِ ہند میں چھیڑ چھاڑ مہنگا پڑ سکتا ہے۔ ناخدا مسجد کے امام مولانا شفیق قاسمی نے عوام سے پرامن تحریک جاری رکھنے کی گزارش کرتے ہوئے کہا کہ اس قانون کی مخالفت کے لئے وہ ہر طرح کی قربانی دینے کے لئے تیار ہیں جیسا کہ ماضی میں مسلمانوں نے اپنے خون سے اس ملک کی آبیاری کی ہے۔ جلسے کی نقابت ابوالحسن انصاری نے بحسن وخوبی انجام دئیے۔ پروگرام کا اختتام پر جلسے کا نگران مولانا منصور قادری نے تمام حاضرین مجلس اور مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اعلان کیا کہ عنقریب ادارہ کا ایک وفد ٣١٣ کا لشکری شکل میں گورنر سے ملاقات کرے گا اور انہیں میمورنڈم سونپے گے۔ پروگرام کو کامیابی سے ہمکنار کرنے والوں میں ادارہ کے رکن تاج عالم خان، ایڈوکیٹ ارشاد یقوب، عابد قریشی و دیگر موجود تھے۔