سیاست سیاست

نئےموٹر قانون کے بعد بھی حادثات میں کمی نہیں:حکومت کا اعتراف

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 03-Dec-2019

نئی دہلی،(یو این آئی) حکومت نے پیر کو راجیہ سبھا میں اعتراف کیا کہ حالیہ موٹر ایکٹ کو لاگو کئے جانے کے باوجود سڑک حادثات میں موت کی تعداد میں کوئی فرق نہیں آیا ہے۔سڑک ٹرانسپورٹ کے وزیر نتن گڈکری نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بلیک اسپاٹ کی وجہ زیادہ تر حادثات ہو رہے ہیں۔ حکومت نے سات سات ہزار کروڑ روپے کےدو منصوبوں کو عالمی بینک کی منظوری کے لئے بھیجاہے تاکہ ایسی جگہوں کے ڈیزائن میں بہتری کی جا سکے۔انہوں نے کہا کہ ٹریفک سے متعلق سخت قانون کو لے کر اسکول، سماجی تنظیموں اور کئی دیگر ذرائع سے لوگوں بیدار کیا جا رہا ہے۔مسٹر گڈکری نے تملناڈ حکومت کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ وہاں بہتر کام ہوا ہے اور سڑک حادثات میں 29 فیصد کی کمی آئی ہے۔ دیگر ریاستی حکومتوں کو بھی تمل ناڈو کی طرز پر کام کرنے کے لئے خط بھیجا گیا ہے۔ ہر ضلع میں ڈرائیوروں کی تربیت کے لئے مرکز قائم کیے جا رہے ہیں تاکہ ڈرائیوروں کو سڑک کی حفاظت سے متعلق زیادہ سے زیادہ معلومات فراہم کی جا سکے۔انہوں نے ایک اور سوال کے جواب میں کہا کہ ممبئی-گوا شاہراہ ایک سال کے اندر بن کر تیار ہو جائے گا۔ چار لین کی اس سڑک کو کنکریٹ سے بنایا جا رہا ہے۔ سڑک کی تعمیر کی رفتار پہلے دو کلومیٹر روزانہ تھی جو اب بڑھ کر 30 کلومیٹر روزانہ ہو گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ سڑک کی تعمیر سے متعلق 26 منصوبوں میں مسائل ہے جنہیں دور کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ۔ قومی دارالحکومت میں 50 ہزار کروڑ روپے کی لاگت سے سڑک منصوبہ بنایا جا رہا ہے۔ دوارکا ایکسپرس موٹروے کی تعمیر 10 ہزار کروڑ روپے کی لاگت سے کی جا رہی ہے۔ ان منصوبوں کی تکمیل پر دارالحکومت میں آلودگی کم ہو جائے گی ۔

About the author

Taasir Newspaper