ہندستان ہندوستان

32 ہزار ٹن پیاز سڑگیا، لوگ 120 روپے خرید رہے ہیں

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 04-Dec-2019

نئی دہلی، کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے کے کے راگیش نے راجیہ سبھا میں پیاز کی آسمان چھوتی قیمتوں کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ ملک میں مناسب ذخیرہ کرنے کی سہولت نہ ہونے کی وجہ سے 32 ہزار ٹن پیاز سڑ گیا اور لوگ 120 روپے فی کلو کے حساب سے پیاز خریدنے پرمجبور ہیں جبکہ حکومت منھ تک رہی ہے۔مسٹر راگیش نے وقفہ صفر میں اس مسئلہ کو اٹھاتے ہوئے کہا کہ ہندوستان دنیا میں سب سے زیادہ پیاز برآمدکرتا ہے لیکن آج ملک میں پیاز کی قیمتیں آسمان پر پہنچ چکی ہیں۔پیاز کی قیمتیں 120 روپے کلو سے زیادہ ہوگئی ہے اور حکومت خاموش بیٹھی ہے۔انہوںنے الزام لگایا کہ یہ مسئلہ ہر سال نومبر۔دسمبر میں پیدا ہوتا ہے۔ اس مرتبہ اکتوبر میں یہ مسئلہ پیدا ہوگیا اور یکم نومبر کو وزیر نے بیان دیا تھا کہ ملک میں پیاز کی پیداوار 30 فیصد کم ہوئی ہے۔ وزیر نے یہ بھی بتایا کہ 32 ہزار ٹن پیاز گوداموں میں سڑگیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ نومبر سے دسمبر ہوگیا حکومت ہاتھ پر ہاتھ دھری بیٹھی ہے۔ اس نے مداخلت کیوں نہیں کیا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ ہر سال جمع خوری اور کالابازاری کرنے والے لوگ پیاز مہنگے دام میں فروخت کرتے ہیں لیکن حکومت کارروائی نہیں کرتی بلکہ ان کو سلامتی مہیا کراتی ہے۔ انہوںنے سوال کیا کہ حکومت اس مسئلہ پر سنجیدہ کیوں نہیں ہے اور وہ مداخلت کیوں نہیں کرتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper