این آر سی اور سی اے اے کے خلاف خواتین نے انسانی زنجیر بنائیں

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 03-Jan-2020

مدھوبنی ؍پنڈول :(محمد کریم اللہ )این آر سی اور سی اے اے کے خلاف 13کیلومیٹر لمبی خواتین نے بنایا انسانی زنجیر ۔ آج سکڑی تھانہ حلقہ کے تار سرائے سے پنڈول ہائی اسکول میدان تک خواتین کے ذریعہ انسانی زنجیر بنایا گیا ۔ جس کو لیکر صبح سے سڑکوں پر خواتین کا ہجوم لگنے لگا تھا ۔ تار سرائے کے مکرم پور ، نوادا، موہن بدھیان سے آئیں خواتین کا قافلہ سب سے پہلے سکڑی کوسی پروجیکٹ احاطہ پہنچا جہاں سے خواتین کا ایک قافلہ سکڑی چوک کی جانب سے دوسرا قافلہ پنڈول کی جانب سے انسانی زنجیر بنار ہی تھیں ۔ خواتین کی تعداد بہت زیادہ تھی۔ جس وجہ سے انتظامیہ کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ۔ حفاظتی انتظامات کےلئے پنڈول اور سکڑی پولس کے ساتھ اضافی فورس اور خاتون فورس بھی بلائے گئے تھے ۔ این آر سی اور سی اے اے کی مخالفت کر رہی خواتین نے بتایا کہ آئین کے ساتھ کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ این آر سی اور سی اے اے ملک کے 70فیصدغریب ، دلت اور مسلمانوں کے ساتھ دھوکہ ہے ۔ حکومت روزگار اور مہنگائی پر کوئی کام نہیں کر رہی ہے ۔ بلکہ ہندومسلم کے مدعے کو اچھال کر اپنی ناکامی چھپانے میں لگی ہے ۔ انسانی زنجیرکے پرامن اختتام کے بعد خواتین نے پنڈول بی ڈی او مہیشور پنڈ ٹ ، سی او پنکج کمار ، پنڈول تھانہ انچارج انوج کمار کو ایک میمورنڈم دیا ۔ اس دوران سکڑی تھانہ انچارج اشوک کمار اور پنڈو ل تھانہ انچارج انوج کمارنے نظم و نسق پر لگا تار نظر بنائے رکھا ۔