سیاست سیاست

بہار میں این آرسی کا سوال ہی نہیں،قانون سازیہ میں وزیراعلیٰ کا بڑا اعلان

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 13-Jan-2020

پٹنہ: وزیراعلیٰ نتیش کمار نے آج قانون سازیہ کے خصوصی اجلاس کے دوران کہا کہ پورے ملک میں  شہریت قانون ،این آر سی اور این پی آر پر احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ لیکن میں ریاستی عوام کو یقین دلانا چاہتاہوں کہ بہار میں این آر سی کا کوئی سوال ہی نہیں ہے۔ آج اسمبلی میں اسمبلی اسپیکر وجئے کمار چودھری نے ایس سی ایس ٹی سے متعلق آئینی ترمیمی بل کو اتفاق رائے سے منظور کرنے کا اعلان کیا۔ اس کے ساتھ ہی ایس سی ایس ٹی ریزویشن کو ایک بار پھر اگلے دس برسوں یعنی جنوری 2030 تک کے لئے نافذ ہوگیا۔ اس بیچ وزیر اعلی نتیش کمار نے سی اے اے کے معاملہ پر اسمبلی میں خصوصی بحث کرانے کی بات کہی ہے ۔ وزیر اعلی نتیش کمار نے سوموارکو اسمبلی میں کہا کہ ہر اس معاملہ پر بحث ہونی چاہئے ، جس کی ضرورت ہو اور جس کو لے کر کسی کے ذہن میں کوئی شک ہو ۔ نتیش کمار نے کہا کہ جس نکتہ پر الگ الگ رائے آئے ، اس پر بحث کی جانی چاہئے ۔ وزیر اعلی نے واضح کیا کہ این آر سی لاگو کرنے کا کوئی سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے ۔ نتیش نے کہا کہ ہم سی اے اے پر خصوصی طور پر بحث کریں گے ، لیکن این آر سی کا تو سوال ہی نہیں ہے ۔نتیش کمار نے کہا کہ این آر سی کا کوئی جواز نہیں ہے ۔ نتیش کمار نے این پی آر کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس میں کچھ اور بھی پوچھا جارہا ہے ، ہم بھی چاہتے ہیں کہ اس موضوع پر بحث ہو ۔ اگر سب لوگوں کی خواہش ہوگی تو اسمبلی میں بھی بحث ہوگی ۔ وزیر اعلی نے اس کے بعد ذات پر مبنی مردم شماری کا بھی تذکرہ کیا اور کہا کہ ہم بھی چاہیں گے کہ ذات پر مبنی مردم شماری ہو ۔نتیش کمار نے کہا کہ 1930 کے بعد ایک مرتبہ پھر ذات پر مبنی مردم شماری ہونی چاہئے ۔ جل جیون ہریالی ابھیان کا تذکرہ کرتے ہوئے وزیر اعلی نے کہار کہ ریاست میں سبھی تالابوں پر سے تجاوزات کو ہٹایا جارہا ہے ، جن لوگوں کو تالاب پر سے ہٹایا جارہا ہے اور وہ غریب طبقہ کے ہیں ، تو ویسے لوگوں کو دیگر مقامات پر بسایا جائے گا ۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper