بینک ملازمین کی ہڑتال سے بینکنگ خدمات متاثر ، سوموار کو کھلیں گے بینک

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 01-Feb-2020

پٹنہ: یونائیٹیڈ فورم آف بینک یونینس کی اپیل پر آج سے بینک ملازمین کی دو روزہ ہڑتال شروع ہوگئی۔ بینکوں میں تالا بندی کر گیٹ کے باہر ملازمین اپنی مطالبات کی حمایت میں مظاہرہ کرتےہوئے نظر آئے۔ اتوار کو ہفتہ وار تعطیل ہونے کی وجہ سے اب سوموار کو ہی بینک کھلیں گے۔ واضح ہو کہ اس ماہ کی 8 جنوری کو بھی بینک میںہڑتال تھی۔ 10 سنٹرل ٹریڈ یونینوں نے مرکزی حکومت کی اقتصادی پالیسی کے خلاف بھارت بند کااعلان کیاتھا۔ وہیں بینک یونین نے کہا ہے کہ اگر مقررہ وقت میں ہمارے مطالبات تسلیم نہیں کئے گئے تو آئندہ یکم اپریل سے سبھی بینک بے مدت ہڑتال پر چلے جائیں گے۔ یونین کے کنوینر سنجئے کمار سنگھ کے مطابق آئی بی اے اور یو ایف ڈی بی یو کی بات چیت ناکام ہونے کے سبب بینکوں میں دو دن کی ہڑتال کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 37 بار اس سلسلے میں میٹنگ ہوچکی ہے۔ وہیں اے آئی بی او سی کے جنرل سکریٹری اجیت کمار، مشرا نے بتایا کہ سال 1977 تک بینک افسر کی تنخواہ 760 روپئے اور آئی اے ایس افسر کی تنخواہ 700 روپئےہوا کرتی تھی۔انہوں نے کہا کہ تنخواہ میں کم سے کم 20 فیصد کااضافہ کیا جائے ساتھ ہی بینکوں میں ورکنگ ڈے پانچ دن کرنے، سبھی برانچوں میںیکساں ورکنگ ڈے ، خصوصی بھتہ کا بنیادی تنخواہ میں ضم کرنے، این پی ایس کو ختم کرنے، جیسے اہم مطالبات شامل ہیں۔