جے این یو پر حملہ کے خلاف آئیسا اور انوس کا احتجاجی مارچ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 07-Jan-2020

بتیا: (انیس الوریٰ)جے این یوپر حملہ کے خلاف آل انڈیا اسٹوڈنٹ ایسوسی ایشن اور انقلابی نوجوان نے بس اسٹینڈسے احتجاجی مارچ کیا۔ جواہر لال نہرو یونیوسیٹی میں اتوار کی شام کو کیمپس کے اندر داخل ہوکر جے این یو طلبا یونین کے صدر ،جنرل سکریٹری سمیت دیگر طلبا اور استادوں پر 50سے زیادہ نقاب پوش حملہ آوروں نے کئی ہاسٹلوں میں جاکر ڈنڈے اور لاٹھی سے طلبا اور طالبات پر حملہ کیا ۔ جس میں زیادہ تر اپنے چہرے پر کپڑا باندھ رکھے تھے ۔ یہ حملہ جے این یو انتظامیہ ، دہلی پولس اور جے این یو کے حفاظتی گارڈ کی ملی بھگت سے کیا گیا ہے ۔ مذکورہ باتیں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انوس کے ضلع کنوینر فرحان رضا نے کہا ۔ طلبا لیڈر میزان امام نے کہاکہ جے این یو کے طلبا اور طالبات پر حملہ کا جو ویڈیو وائرل ہوا ہے ۔ اس میں صاف دیکھائی دیتا ہے کہ یہ غنڈے ہاسٹل میں داخل ہوکر طلبا کے ساتھ مار پیٹ کر رہے ہیں ۔ انوس ریاستی ممبر سریندر چودھری نے کہا کہ اے بی وی پی کے غنڈے جے این یو کے صرف طلبا ہی نہیں بلکہ پروفیسر پر بھی حملہ کیا۔ حیران کرنے والی بات ہے کہ اقتدار میں بیٹھے لوگ بہادر طلبا سے گھبرا چکے ہیں ۔ جس کے بدولت یہ حملہ کیا جارہا ہے ۔ اس موقع پر سنیل کمار رائو ، عامر اختر ، رنجن پٹیل ، سونو خان ، سجیت مکھرجی ، آزاد ، صادق ، وغیرہ نے بھی اجلاس سے خطاب کیا ۔