سرکاری دستاویزوں میں ہیرا پھیری کی ضلع مجسٹریٹ سے شکایت

Taasir Hindi News Network | Uploaded on 23-Jan-2020

مین پوری(حافظ محمد ذاکر ) ضلع مجسٹریٹ کے آج جنتا دربار میں جب سرائے لطیف کی رہنے والی سرلا دیوی نے اپنی شکایتی عرضی کے ذریعہ ڈی ایم کو بتایا کہ راکیش نے میری ذاتی عمارت پر اپنے غنڈئی کے روز پر اپنا چھجہ ڈال لیا ہے ، جس کی متعدد بار شکایت کر چکی ہوں ،اس سے قبل تھانہ دوس مین شکایت درج کرا چکی ہوں مگر کوئی حل نہیں نکلا ، اس شکایت کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے ڈی ،ایم نے انچارج انسپکٹر قصبہ کرائولی کو وائرلیس پر ہدایت دے دی، ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ یوم تھانہ حل پر دستخط کے ساتھ ساتھ پولیس سپرنٹنڈنٹ نے بھی موقع پر جاکرمعائنہ کر کے کارروائی کرنے کی ہدایات کی تھی ، لیکن 05 دن گزر جانے کے بعد بھی کوئی بھی ریونیو اہلکاریا پولس اہلکار موقع پر نہیں پہنچا،انہوں نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ موصولہ شکایات کا بروقت موقع پر جائزہ لیا جانا چاہئے اور کسی بھی شکایت کنندہ کو اپنی پریشانی کے حل کے لئے بار بار نہیں آنا پڑے ، کرائولی انچارج کو حکم دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آج خود ہی موقع پر جاکر صورتحال کا جائزہ لیں ، اور اگر مخالف کے ذریعہ چھجہ ڈالا گیا ہو تو اسے فوراً ہٹا دیا جائے ۔ مسٹر سنگھ کے سامنے جب قصبہ بیور کے محلہ قاضہ ٹولہ کے دنیش کمار، سراج خان، شمشاد علی، صلاح الدین، ریاض، زین الدین، لڈن، آکیہ بیگم، انیس بیگم، نوربانو، دھرمپال وغیرہ نے اپنی شکایت نامہ کے ذریعے بتایا کہ ہم لوگوں نے 25 سال قبل رمیش چند دبے سے زمین خریدکر مکان تعمیر کیا تھا، اور اسی مکان میںابھی ابھی رہائش پذیر ہے، لیکن کچھ عرصہ قبل کشن پور گڑھیا کے باشندے شیوراج سنگھ نے جعلی دستاویزات من گھڑت اور سرکاری ریکارڈ میں ہیرا پھیری کر کے ہم لوگوں کو اب گھر خالی کرنے کی دھمکی دی جارہی ہے،جس پر ضلع مجسٹریٹ نے تھانہ انچارج بیور ،ڈی،ایس ،پی،ایس ،ڈی،ایم کو خود موقع پر جانے کی ہدایت کی،اور کہا کہ تحقیق کریں کہ جعلی اندراج کی بنیاد پر ریکارڈوں میں ردوبدل کیا گیا ہے،یا نہیں ؟اگردستاویزوں میں ہیرا فیری کی گئی ہے تو فوری طور پر منسوخ کریں اور غیر قانونی اندراج کو نشان زد کریں کر ان کے خلاف مؤثر کارروائی کی جائے۔