انڈیا اے کی جانب سے کھیلنےکا فائدہ ملا: شريس

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 07-Feb-2020

ہیملٹن، (یواین آئی) نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے ون ڈے میچ میں اپنی پہلی بین الاقوامی سنچری مکمل کرنے والے ہندوستانی بلے باز شريس ایئر نے نمبر چار پر بلے بازی کرنے کے سلسلے میں کہا کہ انہیں ہندوستان اے کی جانب سے کھیلنے کی وجہ سے اس نمبر پر بلے بازی کرنے میں مدد ملی ہے۔شريس نے نیوزی لینڈ کے خلاف بدھ کو پہلے ون ڈے میچ میں بہترین بلے بازی کرتے ہوئے 107 گیندوں میں 11 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 103 رنز بنائے تھے جس کی بدولت ہندوستان نے میزبان ٹیم کو 347 کا ہدف دیا تھا۔ اگرچہ بھارتی ٹیم یہ مقابلہ چار وکٹ سے ہار گئی تھی۔شريس نے کہا، “انڈیا اے کی جانب سے کھیلنا ہمیشہ ہی میرے لئے فائدہ مند رہا ہے۔ ایسا نہیں ہے کہ ہندوستان اے کی جانب سے کھیلتے ہوئے نمبر چار پر ہی ہمیشہ بلے بازی کرتا تھا۔ آپ کوحالات کے حساب سے بلے بازی آرڈر میں تبدیلی بھی کرنی پڑتی ہے. “انہوں نے کہا، “منیش پانڈے انڈیا اے کی جانب سے کھیلتے ہوئے نمبر چار پر بلے بازی کرتے ہیں اور ہم ان سے ان کی جگہ نہیں چھین سکتے۔واضح رہے کہ گزشتہ سال انگلینڈ میں آئی سی سی ورلڈ کپ کے دوران ون ڈے میں نمبر چار پر بلے بازی پر شبہ پیدا ہوگیا تھا۔ اگرچہ شريس مسلسل بہترین کارکردگی سے اس نمبر پران کی دعویداری مضبوط ہو گئی ہے۔ لوکیش راہل کی اننگز کی تعریف کرتے ہوئے شريس نے کہا، “راہل جس طرح گیند کو دیکھ کر شاٹ کا انتخاب کرتے ہیں یہ دیکھنا واقعی دلچسپ ہے۔ جب انہوں نے پہلا چھکا لگایا تو میں نے ان سے میدان میں ہی پوچھا کہ انہوں نے گیند کو فٹ بال کی طرح دیکھا تھا۔ بلے بازی کے دوران ان کی منصوبہ بندی سے سیکھنا واقعی بےحد ضروری ہے۔”انہوں نے کہا، “میں پہلی بین الاقوامی سنچری مکمل کرکے خوش ہوں لیکن مجھے اور بھی خوشی جب ہوتی اگر ہم یہ میچ جیت جاتے۔ یہ میرا پہلی سنچری تھی لیکن اب مجھے اور بھی بہتر کرنا ہے۔ میں امید کرتا ہوں کہ اگلی بار جب میں ایسی اننگز كھیلوں تو ہماری ٹیم اس میچ میں فاتح رہے۔ “ٹیم کی شکست پر ہندوستانی بلے باز نے کہا، “یہ محض ایک ہار ہے۔ سبھی کھلاڑی اپنی فارم میں تھے۔ ٹیم میں سبھی کھلاڑیوں کے پاس واپسی کا اعتماد ہے اور ٹیم نے پہلے بھی ایسا کیا ہے لیکن ان سب کے درمیان نیوزی لینڈ کی ٹیم نے بہترین بلے بازی کی۔ “