دنیا بھر سے

ایرانی حکمراں نظام قانونی حیثیت کھو چکا ہے، عوام انتخابات کا بائیکاٹ کریں: رضا پہلوی

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 22-Feb-2020

واشنگٹن ،ایران کے سابق ولی عہد رضا پہلوی نے آج ہونے والے ایرانی انتخابات پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے اسے “جعل سازی” قرار دیا۔ انہوں نے واضح کیا کہ یہ حکمراں نظام کی جانب سے خود کو قانونی حیثیت دینے ایک کوشش ہے۔جمعرات کے روز اپنی ٹویٹ میں پہلوی نے باور کرایا کہ ایرانی حکمراں نظام اپنی قانونی حیثیت کھو چکا ہے۔ انہوں نے ایرانی عوام سے مطالبہ کیا کہ وہ انتخابات کا بائیکاٹ کریں۔رضا پہلوی کے مطابق اس جعلی انتخابات میں ووٹ دینے سے ایک غیر قانونی نظامِ حکومت کو قانونی حیثیت حاصل ہو گی۔ سابق ولی عہد نے کہا کہ وہ ہمیشہ سے اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ ایرانی حکمراں نظام کی بدعنوانی اور کریک ڈاؤن کی ہر صورت میں مزاحمت کی جائے .. اور انتخابات کا بائیکاٹ بھی اسی میں سے ہے۔واضح رہے کہ ایران میں سرکاری ٹی وی نے جمعے کی صبح پارلیمانی انتخابات کے سلسلے میں پولنگ کے آغاز کا اعلان کیا۔ یاد رہے کہ شوری نگہبان نے حالیہ انتخابات کے سلسلے میں 7 ہزار کے قریب نامزد امیدواروں کو نا اہل قرار دیا۔ یہ اقدام سخت گیروں کے حق میں جائے گا جب کہ اصلاح پسند حلقوں میں تذبذب پھیل گیا ہے۔ایرانی سرکاری ٹی وی کے مطابق پولنگ کا آغاز گرینچ کے وقت کے مطابق 4:30 پر ہوا۔ یہ سلسلہ 10 گھنٹے تک جاری رہے گا۔ پارلیمنٹ کی 290 نشستوں پر نمائندوں کے انتخاب کے واسطے رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 5.8 کروڑ ہے۔ایرانی رہبر اعلی علی خامنہ ای نے جمعے کوصبح سویرے اپنا ووٹ ڈال دیا۔ انہوں نے ایرانی عوام پر زور دیا ہے کہ وہ ووٹنگ میں شریک ہوں۔ ساتھ ہی اس موقت کو دہرایا ہے کہ ووٹ دینا ایک مذہبی فریضہ ہے۔سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ایران میں ایک تہائی ووٹروں کی عمر 18 سے 30 برس کے درمیان ہے۔ ووٹروں کی مجموعی تعداد میں خواتین کا تناسب 49.9 فی صد ہے۔

About the author

Taasir Newspaper