سیاہ قانون واپس لینے تک دھرنے کا سلسلہ جاری رہے گا: مظاہرین

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 08-Feb-2020

سیتامڑھی،(اشتیاق عالم)، شہریت قانون کے خلاف دھرنے کا سلسلہ جاری ہے مولانا ابوالکلام آزاد چوک مہسول عیدگاہ میں سی اے اے ، این آر سی اور این پی آر کے خلاف خواتین ومرد لگاتار احتجاج کررہے ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ خواتین روزہ رکھ کر دھرنے میں شامل ہے۔ روزےد ار کا کہنا ہے کہ روزہ رکھ کر دعا قبول ہوتی ہے۔ ملک اور آئین بچانے کے لئے خواتین روزہ رکھ رہی ہیں۔ ملک میں امن وامان بحال رہے ہمیں وطن عزیز ہے۔ سارے جہاں سے اچھا ہندوستاں ہمارا۔ ملک کے لئے ہم لوگ ہرقربانی دینے کو تیار ہیں۔ پرامن مخالفت کا سلسلہ جاری رہے گا۔ جب تک کہ اس سیاہ قانون کو واپس نہ لے لیا جائے۔ ہمارے بزرگوں نے انگریزوں سےآزادی کے لئے متحد ہوکرجنگ آزادی میں حصہ لیا تھا۔ آج ہم اپنے ملک اور آئین کوبچانے کے لئے اپنے گھر کو چھوڑ کر دھرنے پر بیٹھنے کو مجبور ہیں جس طرح ہم سبھی ہندومسلم ، سکھ عیسائی نے آزادی کی لڑائی لڑی ٹھیک اسی طرح ہم سبھی مل کر اس سیاہ قانون کی مخالفت اپنی تحریک جاری رکھیں گے۔ جنیدعالم ، محمد مرتضیٰ ، مولانا محمد اشتیاق عالم مدرسہ رحمانیہ کے صدر محمد ارمان علی ، محمد قمر اختر ، گوہر صدیقی حاجی عبداللہ رحمانی، محمد کلیم ، بشارت کریم، مکھیامحمد ہاشم، محمدگیلانی، محمد راجو، محمد ضمیر ، محمد علیم الدین، مولانا غلام ربانی ، محمد ممتاز ، صفت حبیبی، محمد ستارے، محمد آفاق عرف چاند، محمد افروز عالم، محمد ذکاء اللہ، محمد اشرف، محمد ارشاد اشرف، محمد انوارلحق محمد ظفیر سمیت ہزاروں خواتین موجودتھیں۔