مولانا آزاد نیشنل اردویونیورسٹی میں قومی کونسل برائے فروغ اردو کےموبائیل وین کی آمد

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 12-Feb-2020

حیدرآباد(پریس نوٹ) مولانا آزاد نیشنل اردویونیورسٹی گچی بائولی میں قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان نئی دہلی کی موبائیل ویان اردو زبان کی کتابوں کی نمائش وفروخت کے لیے پہنچی۔ جس کا یونیورسٹی کا اساتذہ ‘اسکالرس اورطلبہ نے خیرمقدم کیا۔ اس ویان میں اردو ادب کی مختلف کتابیں دستیاب ہیں اوریہ کتابیں رعایتی قیمت پرطلبہ کودستیاب کرائی جارہی ہیں۔ پروفیسر محمدظفرالدین ڈائرکٹر نظامت ترجمہ واشاعت نے قومی کونسل کی موبائیل ویان کی مولانا آزاد نیشنل اردویونی ورسٹی میں آمد پرخوشی کااظہار کرتے ہوئے کہاکہ اس سے اسکالرس اورطلبہ کواردو کی اہم کتابوں کے بارے میں معلومات حاصل ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ ویان کی آمد سے ایسا لگتا ہے کہ کیمپس میں بہارآگئی ہو اور یونیورسٹی برادری نے زبردست دلچسپی کے ساتھ کتابوں کی خریداری کی ہے۔ ظفرالدین نے کہاکہ انہوں نے اپنی لائبریری کے لیے مثنوی مولانا روم کی چھ جلدیں خریدی ہیں اور ویان میں بہت ہی معیاری اورعصری کتابیں موجود ہیں۔ ڈاکٹرعابد معزمشیر اردو مرکز برائے فروغ علوم نے کہاکہ آج اردوکی کتابیں قارئین کی دسترس سے دورہوتی جارہی ہیں ایسے میں قومی کونسل کی ویان کی آمد سے اسکالرس وطلبہ نئی کتابوں اورموجودہ دور کے مصنفین تک پہنچ پائیں گے۔ انہو ںنے کہاکہ قومی کونسل کوچاہئے کہ وہ یونیورسٹیوں کے ساتھ ساتھ کالجوں اوراسکولوں میں بھی اس طرح موبائیل ویان کے ذریعہ نئی نسل کو اردو کی طرف راغب کریں تاکہ وہ قومی کونسل کے بچوں کے رسالہ بچوں کی دنیا اوردیگر اردو کی آسان کتابوں کے ذریعہ اردوپڑھنا لکھنا سیکھ سکیں۔ اس سے قبل موبائیل ویان حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی پہنچی تھی ۔سنٹریونیورسٹی آف حیدرآباد کے صدرشعبہ پروفیسر فضل اللہ مکرم کے مطابق یونیورسٹی میں پہلی مرتبہ قومی کونسل کی ویان کے ذریعہ کتابوں کی نمائش وفروخت کا اہتمام کیاگیا تھا اور شعبہ کے اسکالرس وطلبہ نے پینتالیس ہزار روپئے سے زائد کی کتابیں خریدی ہیں۔ انہوں نے قومی کونسل کے ذمہ داروں کومبارکباد پیش کی کہ وہ قارئین تک پہنچ کراردو کے فروغ کے لیے کام کررہے ہیں۔ قومی کونسل کی ویان فروری کے مہینہ میں گلبرگہ‘ شولاپور ‘ عثمان آباد‘ لاتور‘ پرلی اوربیڑ پہنچے گی ۔