کنہیاکمارکی آمد کے پیش نظرکنہیاکے بھائی نے مظاہرہ گاہ کاجائزہ لیا

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 05-Feb-2020

سمری بختیارپور(پریس ریلیز)سمری بختیارپور سب ڈویزن کے رانی باغ میں سی اے اے،سین پی آر اوراین آرسی کے خلاف گزشتہ سولہ دنوں سے چل رہے مظاہرہ میں روزبروزمظاہرین کی تعدادمیں اضافہ ہورہاہے۔غورطلب رہے کہ اس مظاہرہ میں 6فروری کو دن کےدس بجے سی پی آئی لیڈر وسابق صدرطلبہ یونین جے این یوکنہیاکمارکی شرکت ہورہی ہے۔آج ان کی آمد کے پیش نظران کے بھائی پرنس کمار،سی پی آئ کے صوبائی سکریٹری اوم پرکاش ناراین،شنکرپرساد اورسشیل کمار نے مظاہرہ گاہ کاجائزہ لیااورجگہ کی کشادگی اوردوسری سہولیات کو لے کراطمینان کااظہارکیا۔وہیں آج کے مظاہرہ کی خصوصیت یہ رہی کہ بڑی تعدادمیں غیرمسلم لیڈران نے رونق اسٹیج ہوکر مظاہرین کے حوصلے کوپروان چڑھایا۔مدھے پورہ کے بھیم آرمی کے ضلع صدرمناکمارپاسوان نے بالخصوص غیرمسلم مظاہرین کے حوصلے کوبڑھاتے ہوئے کہاکہ اگریہ ملک ہندوراشٹربن گیاتوسب سے پہلے اس میں منواسمرتی میں لکھے برہمن وادقانون نافذہوگااوراس قانون کے ذریعےنچلے طبقے کے ہندووں کے ساتھ جانوروں جیسے سلوک کیے جائیں گے۔انہوں نے کہاکہ ہمارے ہندوبھائیوں کوبی جے پی حکومت کے جھانسے میں نہیں آناہے۔یہ سی اے اے،این پی آراوراین آرسی جتنامسلمانوں کے لیے مہلک ہے اتناہی ہندووں کے لیے بھی مہلک ہے۔اس لیے اس سیاہ قانون کی واپسی تک ہم لوگ اس کے خلاف آوازاٹھاتے رہیں گے۔وہیں بھیم آرمی سہرسہ کے ضلع صدرسنجے کمارپاسوان نے اپنے خطاب میں کہاکہ دوچاردنوں سے شاہین باغ اورجامعہ کے احاطے میں دستورہندمخالف قانون کے خلاف ہماری مائیں،بہنیں اورمادروطن کانام روشن کرنے والے جامعہ کے طلبہ وطالبات کے خلاف اس حکومت کے وزیر،دہلی کے بی جے پی امیدواراوراس کے دوسرے لیڈران جس طرح کی زبان استعمال کررہے ہیں اس سے صاف عیاں ہورہاہے کہ یہ اس ملک کوآگ کے ڈھیرپرکھڑاکرنے کی مکمل تیاری ہے۔انہیں اس ملک سے ذرہ برابرمحبت نہیں ہے۔اصل غداریہی لوگ ہیں جواس ملک کی گنگاجمنی تہذیب کوختم کرنے کے فراق میں ہیں۔اس لیے ہم لوگوں کوشانہ بشانہ مل کراس کے ناپاک ارادے کوخاک میں ملاناہے۔وہیں اے ایم یوکے طلبہ لیڈرابوالفرح شاذلی نے کہاکہ ملک کی سالمیت سبھی مذاہب کے لوگوں کوساتھ لے کرچلنے اوران کی اپنی مذہبی شناخت کوباقی رکھنے میں ہے۔اگرکسی مذہب کے لوگوں کی مذہبی شناخت سے چھیڑچھاڑکیاگیاتواس ملک کوبرباد ہونے سے کوئی نہیں بچاسکتا۔وہیں پھنساہاکے مہنت رام سوروپ داس نے اپنی پیرانہ سالی کے باوجود آج کے مظاہرہ میں شریک ہوکرمظاہرین کوحوصلہ دیا۔