بی جے پی کی تانا شاہی جو برداشت نہیں کرےگا ،اسے جیل میں ڈال دیا جائے گا:ببر

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 19-March-2020

نئی دہلی،(یو این آئی) کانگریس کے سینئر لیڈر اور رکن پارلیمنٹ راج ببر نے بنگلور کے ریسارٹ میں ٹھہرے ہوئے مدھیہ پردیش کے کانگریس ممبران اسمبلی سے ملاقات کرنے گئے پارٹی رہنما دگوجے سنگھ کو حراست میں لینے کو تانا شاہی قرار دیتے ہوئے بدھ کو کہا کہ جو اس طرح کا ظلم برداشت نہیں کرے گا اسے جیل میں ڈال دیا جائے گا۔مسٹر ببر نے پارلیمنٹ کے احاطےمیں صحافیوں کو بتایا کہ مسٹر سنگھ پارٹی کے سینئر لیڈر ہیں،وہ مدھیہ پر دیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور راجیہ سبھا کے رکن ہیں،اگر وہ اپنے ساتھ کام کر چکے ممبران اسملی سے ملاقات کرنے بنگلور کے ایک ریسارٹ میں جاتےہیں تو انہیں مدھیہ پردیش کے عوامی نمائندے سے ملاقات کی اجازت دینے میں کیا پریشانی ہے۔اگر مسٹر دگوجے سنگھ ان لوگوں سے بات کر کے اختلافات دور کرنا چاہتے ہیں تو اس میں کسی کو کیا دقت ہو سکتی ہے۔راجیہ سبھا رکن مسٹر ببر نے کہا کہ کس قانون کے تحت مسٹر سنگھ کو ریسارٹ میں ٹھہرے ممبروں سے ملنے نہیں دیا گیا اور انہیں حراست میں لیا گیا۔انھوں نے الزام لگایا کہ ان دنوں قانون نافذ کرانے والی ایجنسیاں ویسا ہی کرتی ہیں جیسا بی جے پی کے لیڈر کروانا چاہتے ہیں۔بی جے پی کے زیر اقتدار ریاستوں میں تانا شاہی کا عالم ہے۔قابل ذکر ہے کہ مسٹر سنگھ بنگلور کے ایک ریسارٹ میں ٹھہرے ہوئےمدھیہ پردیش کے 22-21 ارکان اسمبلی سے ملاقات کرنے گئے تھے جہاں انھیں حراست میں لے لیا گیا۔اس معاملےکے تعلق سے کانگریس ممبران نے آج راجیہ سبھا میں وقفہ سوالات شروع ہوتے ہی زبر دست ہنگا مہ کیا جس سے ایوان کی کارروائی دوپہر 2بجے تک کے لئے ملتوی کر دی گئی۔