ہندوستان میں قومی یکجہتی کی عظیم الشان مثال دربار خواجہ

Taasir Urdu News Network | Uploaded on 03-March-2020

مظفرپور( اسلم رحمانی) قریب ۹۰۰ سال پہلے کے متحدہ ہندوستان یعنی پاکستان، بنگلہ دیش، افغانستان کی اجتماعی آبادی کے درمیان بلا تفریق ہندو، مسلم ،سکھ، عیسائی، یہودی، مجوسی، پارسی، بدھسٹ، جین وغیرہ صرف اور صرف انسانیت کو سامنے رکھ کر جن خدمات جلیلہ کو سلطان الہند غریب نواز حضرت خواجہ معین الدین چشتیؒ نے انجام دیا، اسی کا نتیجہ ہے کہ آج دربار خواجہ ہر مذہب کے لئے مرجع خلائق ہے،خواجہ اجمیری عوام کومانوس کن انداز و زبان میں نہ صرف یہ کہ درس دیتے تھے بلکہ اپنے صفات و کردار اور اعمال و داد رسی کا ایسا دل کش نظارہ پیش کرتے تھے کہ مخلوق جوق درجوق ان کی گرویدہ ہو جاتی تھی، یہی ان کی مقبولیت اور شہرت کا راز ہے، ، اولیائے متقدمین و متاخرین میںنمایاں شخصیت عطائے رسول خواجہ خواجگان سرکار اجمیر سے منسوب ماہِ رجب کی یکم تاریخ سے ۶ رجب المرجب کے پورے ایام میں عالم اسلام کی اکثر خانقاہوں میں منعقد ہونے والے مسلسل محافل و مجالس کی کثرتوں کے تسلسل کے تحت سر چشمئہ علم و حکمت مرکزی خانقاہ آبادانیہ و ادارئہ تیغیہ ، ماڑی پور کے زیر اہتمام شش روزہ عظیم الشان اختتامی مجلس کے پر ہجوم محفل عرس سے خطاب کے دوران مسند نشینِ تیغِ علی حضرت علامہ الحاج شاہ احمد علی علوی القادری قبلہ مد ظلہ العالی نے مذکورہ خیالات کا اظہار کرتے ہوئے آگے فرمایا کہ تعلیماتِ تصوف کے فروغ کی کاوشوں کے لئے خانقاہ شریف سے ملحق تنظیموں میں کل ہند تیغی جمیعۃ العلماء و الصوفیاء ، تیغی جمیعۃ الطلباء ، تیغی دار المصنفین، تیغی مجلسِ تبلیغ و ارشاد اور شعبوں میں تیغی مرکزی دارالقضاء و الافتاء ، تیغی شعبئہ نشر و اشاعت و رابطئہ عامہ، تیغیہ ایجو کیشنل اینڈویلفئیر سوسائیٹی، مرکزی مدرسہ تیغیہ انوار العلوم مظفر پور ،شاخ مدرسہ تیغیہ انوار العلوم دھنباد ، فلاحِ انسانیت فاؤنڈیشن ٹرسٹ، اسٹیپنگ اسٹون پبلک اسکول، تیغی بوائز ہاسٹل، براہیمی گرلس ہاسٹل کے عہدیدران و اراکین، ذمہ داران و کارکنان یقیناً مبارک باد کے مستحق ہیں،مقررین خصوصی میں مفتی ماہرلقادری ، مفتی نصیر الدین ، مفتی سعید احمد قادری، قاری قیصر دیؤریاوی، مولانا غلام نبی حسن قادری، مولانا جمیل اختر ، قاری شاہد رضاوغیرہم نے فرمایا کہ اپنے اسلاف و اکابرین کی یاد منانااور ان کے کارناموں کو زندہ رکھنا اربابانِ عشق و وفا کا وطیرہ رہا ہے، اللہ کا فضل ہے کہ مرکزی خانقاہ تیغیہ ان روایتوںکو زندہ رکھنے میں تا حال تازہ دم ہے، اس بارونق و روحانیت آمیز محفل میں طلبائے مرکزی مدرسہ تیغیہ انوار العلوم نے کیف آگیں ترنم کے ساتھ بارگاہِ خواجہ میں منقبت پیش کرکے سامعین کو محظوظ کیا، بعدہ ملک میں جاری تحریک تحفظ آئین ہند میں کامیابی کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں اور لنگر خواجہ تقسیم کیا گیا۔