ریاست

بہار یوتھ فیڈریشن کی جانب سے پگڑا گاؤں میں رقم سمیت درجنوں افراد کے درمیان خوردنی اشیاء تقسیم

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Samastipur (Bihar) on 22-May-2020

سمستی پور:  لاک ڈاؤن کی کٹھن صورتحال میں آج ہمارے ملک کو مثالی ایثار و یکجہتی کی ضرورت ہے جو کہ حکمران، سیاسی و دینی شخصیات، سرکاری و نجی اداروں کے افسران ، ممتاز صنعتکار، کاروباری شخصیات، اور سماجی رہنماؤں کی عملیت پسندی کی متقاضی ہے۔مخیر حضرات کو اپنے اپنے دائروں ،احاطوں اور حدود کے اندر مستحقین کی مدد کو یقینی بنا نا چاہیے ، اور ملک کے متمول طبقات کی جانب سے صلہ رحمی کے جذبہ کو بروئے کار لا کر اپنے پاس پڑوس، گلی محلے اور شہر بھر میں ایسا اہتمام کرنا چاہیے کہ کوئی فرد کسی گھر میں بھوکا نہ سوئے اور ادویات نہ ہونے کے باعث کسی کی ہلاکت نہ ہو یہ باتیں بہار یوتھ فیڈریشن کے صدر محمد تمنا خان نے بہار یوتھ فیڈریشن کی جانب سے دلسنگھ سرائے بلاک حلقہ کے پگڑا گاؤں میں ضرورت مندوں کے درمیان رقم سمیت خوردنی اشیاء تقسیم کرنے کے دوران کہیں انہوں نے کہا کہ دوسروں کی مدد کرنا ان کی ضروریات کو پورا کرنا اللہ تعالیٰ کے نزدیک نہایت پسندیدہ عمل ہے، اور دوسروں کی خیر خواہی اور مدد کرکے حقیقی خوشی اور راحت حاصل ہوتی ہے، جو اطمینان قلب کے ساتھ ساتھ رضائے الٰہی کا باعث بنتی ہے،بہار یوتھ فیڈریشن کے رکن پپو خان نے کہا کہ محسن انسانیت نبی کریم محمد صلی اللہ علیہ و سلم نے نہ صرف حاجت مندوں کی حاجت روائی کرنے کا حکم دیا بلکہ عملی طور پر آپ صلی اللہ علیہ وسلم خود بھی ہمیشہ غریبوں،یتیموں،مسکینوں اور ضرورتمند کی مدد کرتے،محمد روبید نے کہا کہ ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا بھائی ہے وہ نہ اس پر ظلم کرتا ہے اور نہ اسے بے یارومددگا ر چھوڑتا ہے۔ جو شخص اپنے کسی مسلمان بھائی کی حاجت روائی کرتا ہے ،اللہ تعالیٰ اس کی حاجت روائی فرماتا ہے اور جو شخص کسی مسلمان کی پردہ پوشی کرتا ہے اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اس کی ستر پوشی فرمائے گا،سینئر صحافی تنویر عالم تنہا نے کہا کہ انسانوں سے پیار و محبت اور ضرورت مند انسا نوں کی مددکے عمل کو ہر دین اور مذہب میں تحسین کی نظر سے دیکھا جا تا ہے لیکن دین اسلام نے خدمت ِ انسا نیت کو بہترین اخلاق اور عظیم عبادت قرار دیا ہے،محمد فیروز نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے انسانوں کو یکساں صلا حیتوں اور اوصاف سے نہیں نوازا بلکہ اُن کے درمیان فرق وتفا وت رکھا ہے اور یہی فرق و تفاوت اس کا ئنات رنگ وبو کا حسن و جما ل ہے ۔ وہ رب چاہتا تو ہر ایک کو خوبصوت ،مال دار،اور صحت یاب پیدا کر دیتا لیکن یہ یک رنگی تواس کی شانِ خلاقی کے خلاف ہوتی اور جس امتحان کی خاطر انسان کو پیدا کیا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper