ریاست

سوشل میڈیا پر مولانا کے خلاف قابل اعتراض مواد پوسٹ کرنے پر ایف آئی آر درج

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

تاثیر اردو نیوز سروس،6؍جون، 2020

عالم دین و عالمی شہرت یافتہ خطیب و ناظم کے خلاف فیس بک پر قابل اعتراض مواد پوسٹ کے خلاف شکایت پرپولیس حرکت میں
رانچی: (پریس ریلیز)معروف شیعہ عالم دین و شہرت یافتہ خطیب و ناظم مقاصدہ مولانا علی عباس کے خلاف سوشل میڈیا کے فیس بک پر ارجمند کاظمی نام کے ایک شخص کی فیس بک آئی ڈی سے یکم جون کو ایک قابل اعتراض پوسٹ کیا گیا۔جس میں مولانا کے خلاف کافی نازیبا جملے استعمال کئے گئے اور انکی شخصیت کو داغدار کرنے کی بھر پور کوشش کی گئی۔واضح رہے کہ مولانا علی عباس چھپروی نئی نسل کے ممتاز و منفرد لب و لہجہ کے عالمی شہرت یافتہ خطیب ہیں اور سوشل میڈیا پر بھی کافی سرگرم ہیں۔ انکی مجالس و محافل یو ٹیوب پر بھی کافی پسند کی جاتی ہے۔ مولانا علی عباس چھپروی نہ صرف جوانوں میں بلکہ بزرگوں اور نوجوانوں میں بھی کافی مقبول ہیں اور انکی تقریر کو کافی پسند کیا جاتا ہے۔ اور سوشل میڈیا پر انکے پرستاروں کی تعداد بھی ہزاروں میں ہے۔ شاید اسی وجہ سے سوشل میڈیا کے ذریعے انکو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ قابل اعتراض پوسٹ کے بعد سے ہی انکے پرستاروں میں کافی غم و غصہ ہے اور لوگ ایسی گھنونی حرکت کرنے والے کے خلاف سخت کاروائی کا مطالبہ بھی کر رہے ہیں۔ اس پوسٹ کی وجہ سے مولانا کی شبیہ کو مجروح کرنے کی کوشش کی گئی جس کے خلاف مولانا علی عباس  نے مظفرپور کے ٹاؤن تھانہ میں ایف آئی آر درج کرایا ہے۔ مولانا نے
کہا کہ سوشل میڈیا پر ارجمند کاظمی نام کی ایک آئی ڈی سے ہتک آمیز اور قابل اعتراض باتیں پوسٹ کر انکی  شخصیت کو مجروح کرنے کا کام کیا گیا ہے۔جس سے انکو شدید قلبی صدمہ ہوا اور انکے ساتھ انکے چاہنے والوں کے جذبات بھی مجروح ہوئے ہیں۔ ایسے لوگوں کو عبرتناک سزا ملنی چاہئے تاکہ کوئی غلطی سے بھی کسی عالم دین کے خلاف نازیبا اور قابل اعتراض باتیں پوسٹ نہ کرے۔ ٹاؤن تھانہ کی پولیس نے اس معاملے میں مولانا کی شکایت پر ایف آئی آر درج کر لیا ہے اور سائبر کرائم کے تحت معاملے کی تفتیش بھی شروع کر دی ہے۔تھانہ انچارج اوم پرکاش کا کہنا ہے کہ اس طرح کی ذلیل حرکت کرنے والا کوئی بھی ہو سائبر سیل کی نگاہوں سے وہ بچ نہیں سکتا۔اوراس طرح کی حرکت کرنے والے کی آئی ڈی کی شناخت کر اسکے خلاف سخت کاروائی کی جائیگی۔ پولیس نے آئی ٹی ایکٹ میں ایف آئی آر نمبر 324/2020 کے تحت 671 آئی ٹی ایکٹ،505/,501 دفعات کے تحت معاملہ درج کر لیا ہے۔ اور تھانہ انچارج نے مولانا علی عباس کو یقین دہانی کرائی ہے کہ اس معاملے میں سائبر سیل کو اس آئی ڈی کی تفصیلات مہیا کرادیا گیا ہے بہت جلد ہی اس آئی ڈی کا استعمال کرنے والا پولیس کی گرفت میں ہوگا۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper