ہندستان

دفاعی سودا بدعنوانی معاملہ: جیا جیٹلی سمیت تین کو چار برس کی قید

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

تاثیر اردو نیوز نیٹ ورک،30؍جولائی2020

نئی دہلی، دہلی کی راوز ایونیو عدالت نے جمعرات کو سمتا پارٹی کی سابق صدر جیا جیٹلی اور پارٹی کے سابق ساتھیوں گوپال پچیروال اور میجر جنرل (ریٹائرڈ) ایس پی مرگئی کو 20برس پرانے دفاعی سودا بدعنوانی معاملہ میں چار برس کی قید کی سزا سنائی ہے۔مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آبی) نے قصورواروں کو زیادہ سے زیادہ سات برس جیل کی سزا دینے کی بدھ کو عدالت سے درخواست کی تھی۔ سی بی آئی عدالت کے خصوصی جج وریندر بھٹ نے سماعت کے بعد آج تک کے لئے اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔اس معاملہ میں ایک دیگر ملزم سریندر کمار سریکھا بعد میں گواہ بن گیا تھا۔عدالت نے سزا کے علاوہ تینوں پر ایک ایک لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے اور دوپہر تین تک تینوں کو خودسپردگی کرنے کی ہدایت دی ہے۔سی بی آئی کی طرف سے پیش ہوئے وکیل نے عدالت میں کہا تھا کہ قصورواروں کوزیادہ سے زیادہ سزا دی جانی چاہئے کیونکہ ان کا جرم نہایت سنگین نوعیت کا ہے۔ سی بی آئی نے کہا تھا کہ تہلکہ نیوز پورٹل کے اسٹنگ آپریشن کے بعد اس معاملہ میں ملزمین کا کردار کھلے طورپر سب کے سامنے آیا۔سی بی آئی نے مانگ کی تھی کہ جیا جیٹلی اور انکی ہی پارٹی کے سابق ساتھی گوپال پچیروال اور میجر جنرل (ریٹائرڈ) ایس پی مرگئی کی سزا میں کوئی نرمی نہ برتی جائے۔ عدالت نے اس معاملے میں 25جولائی کو جیا جیٹلی اور دیگر دونوں کو بدعنوانی اور مجرمانہ سازش کا قصوروار قرار دیا تھا۔
جیا جیٹلی کے وکیل نے عدالت سے ان کی موکل کی عمر کے پیش نظر سزا سنانے میں نرمی برتے جانے کی اپیل کی تھی۔نیو ز پورٹل تہلکہ نے جنوری 2001میں ’آپریشن ویسٹ اینڈ’نامی اسٹنگ کیا تھا۔ اس میں فرضی کمپنی بناکر فوج کے لئے ہاتھ سے چلنے والے تھرمل امیجرز کے سپلائی آرڈر کے لئے قصورواروں کو رشوت لیتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔
جیا جیٹلی اس وقت کے وزیر دفاع جارج فرنانڈیس کی قریبی ساتھی رہی ہیں۔ معاملہ کا انکشاف ہونے کے بعد مسٹر فرنانڈیز کو استعفی دینا پڑا تھا۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سابق صدر بنگارو لکشن کو اس معاملہ میں کلین چٹ مل گئی تھی۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper