سیاست

بہار کو لو جہاد کے خلاف قانون لانا چاہئے: گری راج سنگھ

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Patna (Bihar)  on 21-November-2020

پٹنہ: بہار میں لو جہاد کے خلاف قانون نافذ کرنے کا مرکزی وزیر گری راج سنگھ نے جمعہ کو حمایت کرتے ہوئے دعوی کیا کہ یہ موضوع ملک کی ریاستوں میں پریشانی کا سبب بن گیا ہے۔ گری راج سنگھ نے نتیش کمار حکومت سے درخواست کیا کہ وہ یہ سمجھے کہ لو جہاد اور آبادی پر قابو رکھنا جیسے معاملات کا فرقہ واریت سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ بلکہ یہ معاشرتی ہم آہنگی کا معاملہ ہے۔ گری راج سنگھ نے کہا کہ لو جہاد کو نہ صرف ہندوؤں بلکہ ملک کی تمام ریاستوں کے تمام غیر مسلموں میں بھی مسئلہ کے طور پر دیکھا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کیرالہ میں جہاں عیسائیوں کی بڑی آبادی ہے ، برادری کے افراد نے اس مسئلے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ لوک سبھا میں بہارکے بیگوسرائے کی نمائندگی کرنے والے مرکزی وزیر نے ظاہر طور پر سائرو مالبار چرچ کی ان الزامات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ عیسائی لڑکیوں کو لو جہاد کے نام پر نشانہ بنایا گیا اور ان کا قتل کیا جارہا ہے۔ گری راج سنگھ نے کہا کہ اس مسئلے کو ختم کرنا ہوگا اور اگر بہار میں لو جہاد کو روکنے کے لئے کوئی قانون لایا گیا تو یہ اچھا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کو سمجھنا چاہئے کہ لوجہاد کو روکنا اور آبادی پر قابو پانا معاشرتی ہم آہنگی سے ہے نہ کہ فرقہ واریت کو فروغ د ینا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper