ملک بھر سے

سپریم کورٹ نے کہا- ارنب گوسوامی کو ضمانت نہ دے کر ہائی کورٹ نے کی غلطی

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | New Delhi (India)  on  27-November-2020

نئی دہلی: ریپبلک ٹی وی کے اینکر ارنب گوسوامی کے خلاف مہاراشٹر پولیس کی طرف سے دائر خودکشی کے لیے اکسانے کے میں جمعہ کو سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی ۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ ارنب گوسوامی کے خلاف ایف آئی آر کی جانچ پڑتال سے ان کے خلاف خود کشی کے لئے کوئی مقدمہ چلایا نہیں جاسکتا۔ ایف آئی آر پر گوسوامی کے خلاف الزامات کی نوعیت اور الزام کی سطح پر پہلی بار غور نہیں کیا گیا ۔ ضمانت نہ دینے سے ہائیکورٹ نے غلطی کی۔ سپریم کورٹ نے ارنب گوسوامی کو عبوری ضمانت کی وجوہات بتاتے ہوئے یہ بات بتائی۔جسٹس چندرچوڑ نے کہا کہ یہ دیکھنا ضروری ہے کہ آیا ملزم شواہد سے چھیڑ چھاڑ کرسکتے ہیں، یا ملزم فرار ہوسکتا ہے، یا جرائم کے مواد ریاست کے مفادات کے ساتھ بنایا گیا ہے یا نہیں۔ یہ اصول وقت کے ساتھ ساتھ سامنے آئے ہیں۔ یہاں معاملہ شہری کی آزادی کا ہے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ بمبئی ہائی کورٹ اپنے شہری کی آزادی کے تحفظ کے لئے اپنا فرض ادا کرنے میں ناکام رہی ہے جو شکایت کر رہا تھا کہ اسے اپنے ٹی وی چینل میں اظہار خیال کے لئے مہاراشٹر حکومت نے نشانہ بنایا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper