ملک بھر سے

ٍ مذہب کی بنیاد پر کسی کے ساتھ بھید بھائوغیر آئینی ہے

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir  Urdu  News  Network  |  New Delhi  (India)   on  22-February-2021

نئی دہلی : آل انڈیا یونائیٹیڈ مسلم مورچہ کے قومی دفتر واقع لکشمی نگر میں مورچہ عہدیداران کی ایک اہم میٹنگ منعقد ہوئی جس کی صدرات حاجی کلیم صاحب نے کی ۔اس میٹنگ میں حافظ غلام سرور قومی ترجمان آل انڈیا یونائیٹیڈ مسلم مورچہ ،محمد جہانگیر عالم ،محمد جمیل انصاری،محمد ادریس انصاری،محمد روجد،محمد نوشاد ،اعظم صدیقی،انور خان ،مفتی شاداب حسین ،محمد ہمایون،محمد انیس منظور ودیگر نے شرکت کی ۔اس موقع پر حافظ غلام سرور نے وزیر قانون روی شنکر پرسادکے گزشتہ دنوں راجیہ سبھا میں دئیے گئے بیان پر کہا کہ مورچہ کا صاف ماننا ہے کہ مذہب کی بنیاد پر کسی کے ساتھ بھید بھائوغیر آئینی ہے مذہب کی بنیاد پر کسی کو کچھ دینا یا چھیننا کہیں سے بھی آئینی نہیں ہے لیکن زیر قانون کہتے ہیں کہ کوئی ہندو اگر اسلام قبول کرتا ہے تو اسے اس مراعات ۱۴۳ سے الگ کر دیا جائے گا تو مورچہ کا یہ کہنا ہیکہ جو لوگ صدیوں پہلے آئے تھے تب بھارت کا موجودہ آئین نہیں تھا پھر انھیں اس زمرے میں کیو ں رکھا جارہاہے ۔میٹنگ میں ۳۴۱ کی قانونی لڑائی جاری رکھنے پر آل انڈیا یونائیٹید مسلم مورچہ کے سبھی کارکنان متفق ہوئے اورمشن ۳۴۱ کی تحریک کو جاری رکھنے کا عہد کیا ۔اخیر میں مورچہ کے قومی ترجمان نے سبھی کارکنان کا شکریہ ادا کیا ۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper