ملک بھر سے

پٹرول اورڈیزل کی قیمتوں میں راحت

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir  Urdu  News  Network  |  New Delhi  (India)   on  22-February-2021

نئی دہلی: گزشتہ دو ہفتوں سے آسمان چھورہی پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہورہاہے لیکن گزشتہ دو دنوں سے یعنی اتوار اور پیر کو تیل کمپنیوں نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں تبدیلی نہیں کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سے قبل ایندھن کی قیمتوں میں مسلسل 12 دن تک تیزی دیکھنے کو ملی ۔ دراصل کورونا مدت کے بعد بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ خام تیل پیدا کرنے والے ممالک نے پیداوار کم کرنے کا فیصلہ کیا تھا جس کے بعد خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہو رہا ہے۔ دوسری طرف ریاست اور مرکزی حکومتوں نے پٹرول۔ڈیزل پر بھاری ٹیکس کا بوجھ عائد کردیا ہے۔ اس طرح سے عام آدمی کو اضافی بوجھ عائد کیا جارہا ہے۔ تاہم آج پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ نہ ہونے کی وجہ سے عام آدمی کو راحت ملی ہے۔ دارالحکومت نئی دہلی میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت اتوار کی طرح ہی ہے۔ یہاں آپ کو ایک لیٹر پٹرول کے 90.58 روپے اور ڈیزل کیلئے 80.97 روپے ادا کرنے ہوں گے۔ آج ، آپ کو ممبئی میں فی لیٹر پٹرول 97 روپے خرچ کرنے ہیں۔ یہاں ایک لیٹر ڈیزل کی قیمت 88.06 روپے ہے۔ اسی طرح کولکاتا میں بھی آج پٹرول کی قیمت 91.78 روپے اور ڈیزل 84.56 روپے فی لیٹر ہے۔ چنئی میں آج ایک لیٹر پٹرول کیلئے 92.59 روپے اور ڈیزل کے لئے 85.98 روپے فی لیٹر خرچ کرنے ہونگے۔در اصل ہندوستان میں پٹرول۔ ڈیزل کی خوردہ قیمت عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت پر منحصر ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت کم ہے تو ہندوستان میں پٹرول ڈیزل سستا ہوگا۔ اگر خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو پٹرول ۔ ڈیزل کی قیمت میں اضافہ ہوگا لیکن ایسا ہر بار نہیں ہوتا ہے۔ جب عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو اس کا بوجھ صارفین پر ڈال دیا جاتا ہے ، لیکن جب خام تیل کی قیمت کم ہوتی ہے توحکومت اپنی محصول میں اضافے کے لئے صارفین پر ٹیکس عائد کرتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper