سیاست

پٹرول اور ڈیزل کی نمایاں قیمتوں پر راہل گاندھی کا مودی حکومت پر نشانہ

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir  Urdu  News  Network  |  New Delhi  (India)   on  22-February-2021

نئی دہلی: ملک میں پٹرول اور ڈیزل کی نمایاں قیمتوں پر حزب اختلاف مسلسل حکومت کو نشانہ بناتی رہی ہے۔ کچھ جگہوں پر پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں 100 روپئے فی لیٹر کو عبور کرچکی ہیں۔ کانگریس لیڈر راہل نے پیر کے روز بڑھتی ہوئی ایندھن کی قیمتوں پر مرکزی حکومت پر حملہ کیا ہے۔ راہل گاندھی نے مودی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ وہ عام لوگوں کی جیبیں خالی کررہے ہیں اور ’دوستوں‘ کا جیب بھر رہے ہیں۔راہل گاندھی نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ پیٹرول پمپ پر گاڑی میں تیل ڈالتے وقت جب آپ نظرتیزی سے بڑھتے ہوئے میٹر پر پڑے تب یہ ضرور یاد رکھیں کہ خام تیل کی قیمت میں اضافہ نہیں ہوا ہے ، بلکہ کم ہوئی ہے۔ پٹرول 100 روپئے لیٹر ہے مودی سرکار آپ کی جیب خالی کرکے’دوستوں‘ کو مفت میں دینے کا ایک عظیم کام کررہی ہے!اتوار کے روز تیل کی بڑھتی قیمتوں کے درمیان کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے بھی وزیر اعظم نریندر مودی کو ایک خط لکھا تھا۔ خط میں انہوں نے لکھا کہ وزیر اعظم میں یہ خط آپ کو تیل و رسوئی گیس کی اضافی قیمتوںسے ہر شہری کی پریشانی سے آگاہ کرنے کے لئے لکھ رہی ہوں۔ ایک طرف ہندوستان میں روزگار ختم ہورہا ہے ، ملازمین کی تنخواہوں میں کمی کی جارہی ہے اور گھریلو آمدنی میں مسلسل کمی ہورہی ہے۔ دوسری طرف معاشرے کے متوسط طبقے اور پسماندہ افراد معاش کے لئے جدوجہد کر رہے ہیں۔کانگریس صدر نے خط میں کہا ہے کہ تیزی سے بڑھتی ہوئی مہنگائی اور گھریلو سامان کی قیمتوں میں غیر متوقع اضافہ اور ہر ضروری سامان نے چیلنجوں کو مزید سنگین بنا دیا ہے۔ افسوس کی بات ہے کہ اس مصیبت کی گھڑی میں بھی حکومت ہند عوام کی پریشانیوں کودور کرنے کے بجائے عوام کے دکھوں اور مصائب میں اضافہ کرکے منافع کمارہی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper