راجستھان

سرکار گھر گھر بجلی پہنچانے پر توجہ دے رہی : گہلوت

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

جے پور، 3 اپریل(زاہد حسین ) راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے کہا ہے کہ ریاستی سرکار ریاست کو بجلی میں خود انحصار بنانے کے لئے کوشاں ہے اور اس کے لئے ونڈ اور با ئیو ماس پر کام کرتے ہوئے گھر گھر بجلی پہنچانے کا کام کیا جا رہاہے ۔ مسٹر گہلوت آج ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ ضلع بیکا نیر کے چھتیس گڑھ میں 220 کے وی گرڈ سب اسٹیشن کے افتتاح کے موقع پر خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت شمسی ، ونڈ اور بائیو ماس پر زور دے کر گھر گھر پانی کی طرح کی بجلی پہنچانے کے لئے کام کر رہی ہے اور ہردراز علاقے اور گھر ،تک بجلی پہچانے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماحول کے لئے بائیو ماس کو ضروری قرار دیتے ہوئے اور کہا کہ اس کے لئے لوگوں کو بیدار بھی کیا جا ئے گا ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ریاست میں صنعتی نظام اور سرمایہ کاری بڑھانے پر زور دے رہی ہے۔ اس کے علاوہ کسانوں کو کوئی مشکلا ت پیش نہ آئے ۔ اس کے لئے بجلی کے نرخوں میں اضافہ نہیں کیا گیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک لاکھ 81 ہزار بجلی کے کنکشن دے چکے ہیں اور سولر بجلی سے کسانوں کو 50 ہزار کنکشن دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔ وزیر اعلی نے کہا کہ کسانوں کے کھیتوں میں شمسی پلانٹ لگانے کی کوشش کی جارہی ہے تاکہ کسان آبپاشی کرنے کے علاوہ حکومت کی مدد کرسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت شمسی توانائی کو فروغ دینے کے لئے کام کر رہی ہے اور شمسی توانائی میں بہت امکانات ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گرین کوریڈور اس لئے بنا رہیں تاکہ پیداوار زیادہ ہونے سے اس کی سہولت مل سکے ، اس کے لئے تیاری شروع کی جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کو ریاست پر معاشی بوجھ نہیں ڈالنا چاہئے۔ راجستھان کی صو ر تحال الگ ہونے کی وجہ سے مرکزی حکومت کی اسکیموں میں تمام ریاستوں کے لئے یکساں پیمانے کی وجہ سے راجستھان کو اسکیمیں لوگوں کرنے میں زیادہ اخراجات اٹھانا پڑ رہے ہیں ۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper