ملک بھر سے

سکھ گروؤں کی روایت سے دنیا کو روبرو کرانا ضروری: مودی

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | New Delhi (Delhi)  on 08-April-2021

نئی دہلی:،8اپریل ،وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ ملک میں سکھ گروؤں کی روایت اپنے آپ میں مکمل زندگی کا فلسفہ رہی ہے اور اس کی بنیادی فکر کو نوجوان نسل اور دنیا میں سبھی لوگوں کت پہنچایا جانا چاہئے۔جمعرات کو گرو تیغ بہادر کے 400 ویں پرکاش پروکی یاد کے لئے قائم کردہ اعلی سطحی کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ، مسٹر مودی نے کہا ، ’’گرو تیغ بہادر کے چار سوویں پرکاش پروکا یہ موقع بھی ایک روحانی استحقاق ہے ، اور قومی فریضہ ہے گرو نانک دیو جی سے لے کر گرو تیغ بہادر جی اور پھر گرو گوبند سنگھ جی تک ، ہماری سکھ گرو روایت اپنے آپ میں ایک مکمل زندگی فلسفہ رہی ہے۔ اگر پوری دنیا زندگی کی اہمیت کو سمجھنا چاہتی ہے تو اپنے گروؤں کی زندگی کو دیکھ کر بہت آسانی سے سمجھ سکتی ہے ۔ان کی زندگی میں قربانی بھی تھی، ہمدردی بھی تھی ۔ان کی زندگی میں تعلیم کی روشنی بھی تھی ، روحانی بلندی بھی تھی۔ ہمارے لئے یہ سب سے بڑا موقع ہے کہ ہم اپنے ملک کی اس بنیادی سوچ کو لوگوں تک پہنچائیں۔ ‘‘انہوں نے کہا کہ پچھلی چار صدیوں میں ہندوستان کا کوئی دور نہیں گزرا ، کوئی مرحلہ ایسا نہیں جس کا ہم گرو تیغ بہادر جی کے اثر و رسوخ کے بغیر تصور بھی کرسکتے ہیں! نویں گرو کی حیثیت سے ، ہم سب کو ان سے تحریک ملتی ہے۔ آپ سب ان کی زندگی کے مراحل سے واقف ہیں لیکن ملک کی نئی نسل کے لیے ان کے بارے میں جاننا ، ان کو سمجھنا بھی اتنا ہی ضروری ہے۔مسٹر مودی نے کہا ، ’’تیغ بہادر جی نے کہا ہے ،’ سکھو دکھو ، دونوں سم کری جانے اؤرے مانو اپمانا،یعنی ، خوشی اور غم ، ذلت اور رسوائی ، ان سب
میں ایک جیسا رہ کر اپنی زندگی گزارنی چاہئے۔ انہوں نے زندگی کا مقصد بھی بتایا ہے ، اس کا راستہ بھی دکھایا ہے۔ انہوں نے ہمیں قوم کی خدمت کے ساتھ ساتھ خدمت کا راستہ بھی دکھایا ہے۔ انہوں نے ہمیں برابری ، ہم آہنگی اور قربانی کا منتر دیا ہے۔ ہم سب کا فرض ہے کہ ہم ان منتروں کو خود زندہ کریں اور لوگوں تک پہنچائیں۔‘‘مسٹر مودی نے کہا کہ ملک میں سال بھر میں چار سو ویں پرکاش پرو کا انعقاد کیا جانا چاہئے اور ہمیں دنیا میں بھی زیادہ سے زیادہ تعداد میں لوگوں تک پہنچنے کی کوشش کرنی چاہئے۔ سکھ روایت سے وابستہ تمام تیرتھ مقام ، جو عقیدت کے حامل ہیں ، ان سرگرمیوں کو مزید توانائی فراہم کریں گے۔ گرو تیغ بہادر کی شبیہہ ، ان کے راگوں کی تسبیح ، ان سے متعلقہ ادب ، ثقافتی پروگرام ، یہ لوگوں کو متاثر کریں گے۔ انہوں نے کہا ، “اس میں ڈیجیٹل ٹکنالوجی کے استعمال سے ، یہ پیغامات پوری دنیا میں نئی نسل تک آسانی سے میسر ہوں گے اور مجھے خوشی ہے کہ آج زیادہ تر ممبروں نے ڈیجیٹل ٹکنالوجی کا زیادہ سے زیادہ استعمال کرنے کی تجویز دی ہے ، یہ اپنے آپ میں بدلتے ہوئے ہندوستان کی ایک تصویر بھی ہے۔ ان تمام کوششوں میں ، ہمیں زیادہ سے زیادہ لوگوں کو اپنے ساتھ جوڑنا ہوگا۔ ‘‘وزیر اعظم نے کہا ، ’’اس پورے واقعہ میں ، گرو تیغ بہادر جی کی زندگی اور تعلیمات کے ساتھ ، ہمیں پوری گرو روایت کو بھی دنیا میں لے جانا چاہئے۔ کس طرح پوری دنیا میں سکھ برادری کے لوگ ، اور ہمارے اساتذہ کے کروڑوں پیروکار ان کے نقش قدم پر چل رہے ہیں ، سکھ کس طرح معاشرتی خدمت کے اتنے عظیم کام انجام دے رہا ہے ، ہمارے گرودوارے انسانی خدمت کے بھرپور مراکز کیسے ہیں ، اگر ہم اس پیغام کو پوری دنیا تک پہنچائیں ، تب ہم انسانیت کو بہت زیادہ ترغیب دے سکیں گے۔ میں اس کی تحقیق کرنا چاہتا ہوں اور اسے دستاویز کی شکل میں بھی رکھنا چاہتا ہوں۔ ہماری کوششیں آنے والی نسلوں کی بھی رہنمائی کریں گی۔ یہ بھی گرو تیغ بہادر جی سمیت تمام گروؤں کے پیروں پر ہماری خراج عقیدت ہوگی ، ایک طرح سے کریانجالی بھی ہوگی۔‘‘ مسٹر مودی نے کہا ، ’’ یہ بھی اہم ہے کہ اس انتہائی اہم وقت میں ، ملک آزادی کا امرت مہوتسو بھی منایا جا رہا ہے ، ہماری آزادی کو 75 سال مکمل ہو رہے ہیں۔ مجھے یقین ہے ، گرو کے آشرواد سے ، ہم یقینی طور پر اپنے تمام انعقاد میں کامیاب ہوں گے۔ ‘‘

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper