ممتا بنرجی کے نندی گرام میں ووٹنگ کے دوران الزامات حقیقت میں غلط: ای سی

نئی دہلی،04اپریل ؍اپریل ، بنگال اسمبلی انتخابات میں گذشتہ ہفتے نندی گرام کے ایک پولنگ بوتھ پر وزیر اعلی ممتا بنرجی کے طرز عمل پر شکوک و شبہات ہیں۔ الیکشن کمیشن نے ووٹنگ میں خلل ڈالنے کے اپنے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے بوتھ پر اشارہ کیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے ممتا بنرجی کے ہاتھ سے تحریری شکایت کوحقیقت میں غلط قرار دیا ہے۔ یہ بھی کہا کہ پولنگ بوتھ پر ممتا بنرجی کے برتاؤ سے مغربی بنگال میں امن و امان کو بری طرح متاثر کرنے کا امکان ہے۔جمعرات کو نندی گرام میں ووٹنگ کے دوران وزیر اعلی (جس نے زیڈ پلس سیکیورٹی حاصل کی ہے) بی جے پی اور ترنمول کے حامیوں کے درمیان تناؤ میں پھنس گئے ، انہیں تقریبا دو گھنٹے ایک کمرے میں رہنا پڑا بعد میں انہیں سیکیورٹی فورسز نے باہر نکالا۔ انہوں نے الیکشن کمیشن پر مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ کی ہدایت پر عمل کرنے کا الزام عائد کیا۔ ممتا بنرجی نے کہا تھا کہ ان کی پارٹی نے صبح سے ہی 63 شکایات درج کی تھیں لیکن کمیشن نے اسے نظر انداز کردیا۔ پولنگ بوتھ کے باہر وہیل چیئر پر بیٹھی ممتا بنرجی نے کہا تھا ہم اس معاملے پر عدالت جائیں گے۔ یہ قابل قبول نہیں ہے۔انہوں نے بنگال کے گورنر جگدیپ دھن کھڑکو وہاں سے بلایا اور وہاں کی صورتحال کے بارے میں بتایا اور کہا کہ اس صورتحال کو الیکشن کمیشن کے امن و امان سے نہیں سنبھالا جاسکتا ، جس کی وجہ سے یہ ہوا۔