ریاست

بنگال میں انتخابات کے نتائج کے بعد تشدد کے واقعات میں 12کی موت ، ممتا بنرجی کی امن برقرار رکھنے کیلئے اپیل

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Kolkata (West Bengal)  on 04-May-2021

کلکتہ :،4 مئی،اسمبلی انتخابات کے نتائج کے بعد مغربی بنگال کے مختلف علاقوں میں تشدد ہونے کی اطلاعات ہیں۔ انتخابی نتائج کے اعلان کے بعد شروع ہونے والے تشدد میں کم از کم 12 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔ یہ اعداد وشمار ایک ماہ تک جاری رہنے والے لوگوں کی تعداد سے زیادہ ہوسکتی ہے۔ تشدد کو لیکر بی جے پی اور ترنمول کانگریس میں زبانی جنگ جاری ہے۔ اس دورا ن وزارت داخلہ نے بنگال سے ہونے والے تشدد سے متعلق ایک رپورٹ طلب کرلی ہے۔ دوسری طرف ممتا بنرجی نے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔بنگال انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے والی ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتا بنرجی نے عوام سے امن برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔ تاہم انہوں نے تشدد کا الزام بی جے پی کو ٹھہرایاہے۔ بی جے پی کے قومی صدر منگل کو کلکتہ آرہے ہیں۔ بدھ کوملک بھر میں بی جے پی تشدد کے خلاف احتجاج کرے گی۔ اسی دن ممتا بنرجی تیسری بار وزیر اعلیٰ کا حلف لیں گی۔وزارت داخلہ نے ریاست سے رپورٹ طلب کی ہے۔ بنگال کے گورنر جگدیپ دھنکڑ نے پیر کی شام بنگال کے بی جے پی صدر دلیپ گھوش سے ملاقات کی اور بعد میں ممتا بنرجی سے بھی ملاقات کی۔ دھنکڑ نے ممتا سے اس تشدد پر بات کی اور ریاستی عہدیداروں سے رپورٹ طلب کی ۔ بھارتیہ جنتا پارٹی نے دعویٰ کیا ہے کہ کم سے کم پارٹی کارکنان کا قتل ہوا اور پورے بنگال میں پارٹی کے متعدد حامیوں کے گھروں اور پارٹی دفتر پرحملہ کیاگیا اور آگ زنی کی گئی۔ دوسری طرف ترنمول کانگریس نے پانچ حامیوں کے قتل ہونے کا دعویٰ کیا ہے۔ جن میں سے تین مشرقی بردوان اور ایک ہوبلی کا واقعہ ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper