ریاست

بین الاقوامی سازشوں کا شکار ہے حزب اختلاف: یوگی

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

لکھنؤ ، 20 جولائی (سیلیش کمار سنگھ)۔ اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے منگل کے روز پیگاسس سوفٹ ویئر پر نامہ نگاروں سے گفتگو کر تے ہوے کہ گذشتہ دو روز سے اپوزیشن جماعتیں اس سلسلے میں ملک کے اندر جس طرح کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کر رہی ہیں ، یہ ان کے بیمار ذہن کو بے نقاب کررہا ہے۔زیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ پارلیمنٹ اجلاس کے آغاز سے صرف ایک دن قبل سنسنی خیز خبروں سے معاشرے میں زہریلا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ حزب اختلاف ، جان بوجھ کر یا نادانستہ طور پر بین الاقوامی سازشوں کا شکار ہو کر منفی کردار ادا کر رہا ہے۔
انہوں نے کہا یہ سازش بھارت کو غیر مستحکم کرنے کے لءے ہو رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کی حرکت پہلی بار نہیں ہے۔
یوگی نے سوال کیا کہ کیا سال 2020 میں امریکی صدر کے ہندوستان کے دورے کے دوران دہلی میں ہوا خوفناک فساد کسی سازش کا حصہ نہیں تھا؟ اپوزیشن جماعتوں کی شمولیت کو اس فساد سے جوڑ کر نہیں دیکھا گیا تھا ؟ انہوں نے کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) اور دنیا کووڈ کے انتظام کے لئے ہندوستان کی تعریف کر رہی ہے ، لیکن حزب اختلاف نے عوام کی حمایت کرنے کے بجائے انتشار کا ماحول پیدا کی انہوں نے کہا کہ اپوزیشن بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کے امیج کو خراب اور غیر مستحکم کرنے کے لئے جن منصوبوں سے کام کررہی ہے۔
، وہ انتہائی بدقسمتی کی بات ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کسانوں کی تحریک کے نام پر اپوزیشن ملک کے خلاف سازشیں کرتا نظر آ رہا ہے۔ کسانوں کو ان کے مذہب سے جوڑ کر ملک دشمن کارروائیوں کو فروغ دیا جا رہا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ حزب اختلاف نے پارلیمنٹ میں دیہی پس منظر سے آنے والے نئے وزرا کا متعارف ہو نا پسند نہیں کیا۔ کیونکہ ان کا تعلق شیڈیول ذات ، شیڈیول ٹرایب ، پسماندہ ذات اور دیہی پس منظر سے ہے۔ جن لوگوں نے ملک کی آزادی کے بعد کبھی قیادت نہیں دیکھی تھی ، آج جب انہیں قیادت ملی ہے اپوزیشن کو یہ پسند نہیں ہے۔ کہا پارلیمنٹ کسی کے نقطہ نظر کو ظاہر کرنے کے لئے ایک فورم ہے ، لیکن اگر آپ وہاں شور کریں گے تو یہ جمہوریت کا گلا گھونٹنا ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اپوزیشن کو عوام اور ملک سے معافی مانگنی چاہئے۔ من گھڑت اور ناجائز الزامات کی سرے سے تردید کی جانی چاہئے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper