کھیل

جوکووچ کا یو ایس اوپن جیتنے کا خواب چکنا چور

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

نیویارک،13؍ ستمبر-52 سال میں ایک کیلنڈر سال میں چاروں گرینڈ سلیم جیتنے کے جوکووچ کے خواب کو میدویدیونے چکنا چورکردیا۔ میدویدیوحیرت انگیز طور پر فائنل میں یک طرفہ جیت حاصل کی ۔ اس کے ساتھ جوکووچ کو ریکارڈ 21 واں گرینڈ سلیم جیتنے کے لیے مزید انتظار کرنا ہوگا۔ ان کے پاس 20 گرینڈ سلیم ٹائٹل ہیں۔
جو راجر فیڈرر اور رافیل نڈال کے برابر ہیں۔اس ٹورنامنٹ میں عالمی نمبر ایک کھلاڑی جوکووچ 2021 میں گرینڈ سلیم جیتنے کا 27-0کا ریکارڈ لے کر اترے تھے انہوں نے فروری میں آسٹریلین اوپن کے فائنل میں میدویدیو کو، جون میں فرنچ اوپن اور جولائی میں ومبلڈن میںشکست دی تھی۔تاہم وہ یو ایس اوپن کے فائنل میں اپنی بہترین کارکردگی نہیں کرسکے ۔ وہ بریک پوائنٹس کا فائدہ نہیں اٹھا سکے۔ دوسری طرف چھ فٹ چھ انچ لمبے میدویدیو نے زبردست کھیل کا مظاہرہ کیا ۔ دریںاثنا دراصل جوکووچ ایک سال میں چاروں گرینڈ سلیم ہار گئے ہیں ۔ اس کی وجہ سے وہ کافی مایوس نظر آئے۔ جوکووچ کو اتوار کی رات دیر گئے یو ایس اوپن میں مینس سنگلس کے فائنل میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔
انہیں روسی کھلاڑی ڈینیئل میدویدیف نے یکطرفہ میچ میں 6-4 ، 6-4 ، 6-4 سے شکست دے کر خطاب جیت لیا۔ جوکووچ اس شکست پر غصے میں تھے۔ غصے میں انہوں نے ریکٹ کو تب تک کورٹ پر پٹکا ،جب تک کہ وہ ٹوٹ نہیں گیا۔ ان کی اس حرکت کا ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ جوکووچ نے غصے میں کوئی ریکٹ توڑا ہو۔ اس سے قبل ٹوکیو اولمپکس میں ، جوکووچ اسپین کے پابلو کیریو بوسٹا کے خلاف کانسے کے تمغے کے میچ میں کئی بار اپنا آہاکھویا۔ کبھی انہوں نے ریکیٹ کوا سٹینڈ میں پھینکاتو کبھی ریکیٹ کو نیٹ پر مارا۔ اس کی وجہ سے ان کا ریکیٹ اس وقت بھی ٹوٹ گیاتھا۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper