کھیل

پاکستانی کرکٹرس کی تنخواہ میں 250 فیصد تک کااضافہ

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

اسلام آباد، 14ستمبر۔کمر توڑ مہنگائی اورقرض کے بوجھ تلے دبا پاکستان شدید مالی بحران کا شکار ہے ۔
اس کے باوجودپاکستان میں کرکٹ کے کھلاڑیوں کی تنخواہوں میں 250 فیصد تک اضافہ کر دیا گیا ہے۔ تنخواہ میں اضافے کا سب سے بڑا فائدہ گروپ ڈی کے کھلاڑیوں کو ہوگا۔ ان کی ماہانہ تنخواہ 40 ہزار پاکستانی روپیے یعنی تقریبا ً 17 ہزار ہندوستانی روپیے تھی۔ اب ان کی تنخواہ میں ایک لاکھ اضافہ کیا گیا ہے یعنی اب ان کھلاڑیوں کو ایک لاکھ 40 ہزار پاکستانی روپیے ملیں گے۔پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے نئے سربراہ رمیز راجہ نے کہا کہ گھریلو کھلاڑیوں کی تنخواہ میں 1 لاکھ روپیے کا اضافہ فوری طور پر نافذ کر دیا گیا ہے۔ 192 ڈومیسٹک کرکٹرس کو اس کا فائدہ ملنا شروع ہو گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی اب فرسٹ کلاس اور گریڈ ٹورنامنٹ کے کرکٹرس بھی ہر ماہ 1.4 لاکھ سے 2.5 لاکھ روپیے کے درمیان کما سکیں گے۔اسی طرح گریڈ اے کے کھلاڑیوں کو 13.75 لاکھ کے بجائے 14.75 لاکھ روپیے ، گریڈ بی کے کھلاڑیوں کو 9.37 لاکھ کے بجائے 10.37 لاکھ روپیے اور گریڈ سی کے کھلاڑیوں کو 6.87 لاکھ کی بجائے 7.87 لاکھ پاکستانی روپیے ملیں گے۔پی سی بی کے سربراہ نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ قومی کرکٹرس بے پرواہ ہو کر کرکٹ کھیلیں۔ ہمیں مسائل کا سامنا کرنے اور میچ ہارنے کے لیے بھی تیار رہنا چاہیے۔ کھلاڑیوں کو ٹیم میں اپنی جگہ کے بارے میں فکر نہیں کرنی چاہیے اور بے خوف ہوکر کھیلنا چاہیے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper