ریاست

پنجاب: سونڈی کے حملے سے کپاس کی چار لاکھ ایکڑ فصل تباہ ، گرداوری رپورٹ آگئی

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

چندی گڑھ ، 14 اکتوبر ۔ پنجاب کے نارما کپاس پٹی میں کپاس کی چار لاکھ ایکڑ فصل سونڈی کے حملہ کی وجہ سے تباہ ہوگئی ْ ۔ یہ بات ریونیو ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کی گئی گرداوری رپورٹ میں سامنے آئی ہے۔
کسانوں نے ریاست کے وزیر خزانہ منپریت سنگھ بادل کی رہائش گاہ کو تباہ شدہ فصل کے معاوضے کے لیے گزشتہ دس دنوں سے گھیرے میں لے رکھاہے۔ کسان فصل کا معاوضہ 60 ہزار روپے فی ایکڑ مانگ رہے ہیں۔ لیکن ریاستی حکومت 12 ہزار روپے معاوضہ دینے کی بات پر قائم ہے۔ حکومت کا دعویٰ ہے کہ اس کی طرف سے دیا گیا 12 ہزار روپے فی ایکڑ معاوضہ ملک میں سب سے زیادہ ہے ، جبکہ مرکزی حکومت کی جانب سے مقرر کردہ رقم کے مطابق معاوضہ 5800 روپے فی ایکڑ ہے۔
قابل غور ہے کہ پنجاب میں گلابی سونڈی کے حملے کی وجہ سے کپاس کی فصل کو بھاری نقصان پہنچا ہے۔ کسانوں کا الزام ہے کہ فصل کے نقصان کے باوجود حکومت کا کوئی وزیر ان سے ملنے نہیں آیا۔ ریاست کے اضلاع شریموکتسر ، فاضلکا ، مانسہ اور فرید کوٹ کے کسانوں نے ڈپٹی کمشنر کے دفتر کے سامنے دھرنا دیا اور جب کام نہ ہوا تو کسانوں نے بھٹھنڈہ واقع وزیر خزانہ کی رہائش گاہ کے سامنے دھرنا شروع کر دیا۔
اس مطالبے پر کسانوں کے وفد نے ایک دن قبل پنجاب کے پرنسپل سیکرٹری اور دیگر حکام کے ساتھ میٹنگ کی ، لیکن کسان اپنی بات پر ڈٹے رہے ، جس کے نتیجے میں میٹنگ میں کوئی نتیجہ سامنے نہیں آیا۔ یہاں آج کسانوں نے ریاست کے نرما کپاس پٹی علاقے کے پانچ اضلاع کے کسانوں کی میٹنگ بلائی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper